عراق: نوجوان شیف سوپ کی دیگ میں گرکر جاں بحق

عراق میں ایک نوجوان شیف چکن سوپ کی ایک بڑی دیگ میں گر کر جاں بحق ہوگیا۔ 15 جون کو پیش آنیوالے واقعے میں عیسیٰ اسماعیل کا 70 فیصد جسم جھلس گیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق عراق کے شمالی علاقے زاکو میں 15 جون کو شادی کی ایک تقریب کے دوران پچیس سالہ عراقی شیف عیسیٰ اسماعیل چکن سوپ بنانے کے دوران ایک بڑی دیگ میں گرنے سے جھلس کر شدید زخمی ہوگئے تھے، ان کے جسم کا 70 فیصد سے زیادہ حصہ جل گیا تھا، وہ 5 دن تک زندگی و موت کی کمشکش میں مبتلا رہے اور بالآخر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے۔

انڈیپینڈنٹ اردو کے مطابق نوجوان شیف کے ایک رشتہ دار زارون حسنی نے بتایا کہ عیسیٰ اسماعیل شادی کی تقریبات اور مختلف تقریبات میں کھانا پکایا کرتے تھے۔

متحدہ عرب امارات نیوز کے مطابق اسماعیل تقریبا 8 سال سے باورچی تھے، انہیں علاج کیلئے قریبی شہر دوہوک کے ایک اسپتال لے جایا گیا، تاہم کئی دن تک جلے ہوئے جسم اور شدید زخموں سے لڑنے کے بعد وہ 21 جون کو دم توڑ گئے۔

مقامی کرد میڈیا کے مطابق عیسیٰ اسماعیل کے 3 بچے تھے اور سب سے چھوٹی بیٹی صرف 6 ماہ کی تھی۔

متعلقہ خبریں