علی امین گنڈاپور کی ویڈیو: کشمیر کے چیف الیکشن کمشنر کا وزیراعظم عمران خان کو خط

پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کے چیف الیکشن کمشنر نے وزیراعظم پاکستان کو ایک خط میں اپیل کی ہے کہ وہ وفاقی وزرا اور دیگر حکومتی عہدے داروں کو الیکشن کے ضابطہ اخلاق کی پابندی کرنے کا تحریری حکم جاری کریں۔
چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ عبدالرشید سلہریا نے وزیراعظم عمران خان کے نام اپنے خط میں لکھا کہ ’آزادکشمیر میں شفاف اور منصفانہ انتخابات کے لیے سب سیاسی جماعتوں ، ان کے حامیوں اور پولنگ سٹاف کو الیکشن کے کوڈ آف کنڈکٹ 2021 کی پابندی کو یقینی بنانا  ہو گا۔‘
خط میں لکھا ہے کہ ’الیکشن مہم کے دوران ووٹرز کی آزادانہ رائے کو متاثر کرنے کے لیے کسی بھی قسم  کےمالیاتی یا ترقیاتی پیکج کے اعلانات قطعی ممنوع ہیں۔‘
خط پر آٹھ جولائی کی تاریخ درج ہے۔
مزید پڑھیں
یہ خط بدھ کی شام وفاقی وزیر امور کشمیرعلی امین گنڈا پور کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد لکھا گیا ہے۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ علی امین گنڈا پور ڈڈیال (ایل اے ون) میں تحریک انصاف کے امیدوار چوہدری اظہر صادق کے جلسے کے دوران لوگوں میں نقد رقم بانٹ رہے ہیں۔
ویڈیو میں ایک شخص کو رقم تھماتے ہوئے علی امین گنڈا پور یہ کہتے سنائی دیتے ہیں کہ ’میں آپ کو یہ پیسے دے رہا ہوں ، فی الحال اتنا گزارا کر لیں۔‘
یہ ویڈیو سامنے آنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی حریف سیاسی جماعتوں کے قائدین نے سخت ردعمل دیتے ہوئے وفاقی حکومت پر الیکشن کے کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف وزری کا الزام لگایا تھا۔

پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات 25 جولائی کو ہو رہے ہیں۔ (فائل فوٹو: اے ایف پی)
اردو نیوز کے نامہ نگار بشیر چوہدری نے جب علی امین گنڈا پور کی ویڈیو اور چیف الیکشن کمشنر کے خط کے بارے میں سیکریٹری الیکشن کمیشن راجہ غضنفر سے رابطہ کیا تو انہوں نے کہا کہ ’یہ خط صرف علی امین گنڈا پور سے متعلق نہیں، اس میں سب سیاسی جماعتوں کو لکھا گیا ہے کہ وہ الیکشن کے کوڈ آف کنڈکٹ کی پابندی کریں۔‘
کیا علی امین گنڈا پور کی ویڈیو پر الیکشن کمیشن نے نوٹس لیا؟ اس سوال کے جواب میں سیکریٹری الیکشن کمیشن کا کہنا تھا کہ ’اس واقعے کا نوٹس لیا گیا ہے اور الیکشن کمیشن کے پاس ریٹرنگ آفیسرز کی جانب سے رپورٹ آ چکی ہے، ہم اسلام آباد سے واپس جا کر اس پر مزید کارروائی کریں گے۔‘
سیکریٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ ’اگر کوئی شخص پاکستان سے یہاں آ کر الیکشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرتا ہے تو اس کے خلاف بھی کارروائی ہو سکتی ہے لیکن بنیادی ذمہ داری مقامی امیدوار کی ہے جس کی مہم کے دوران کوئی ایسا واقعہ پیش آیا ہو۔‘
انہوں نے کہا کہ ’الیکشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی صورت میں امیدوار کو نااہل بھی قرار دیا جا سکتا ہے۔‘
خیال رہے کہ پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات 25 جولائی کو ہو رہے ہیں اور اس وقت پاکستانی کی سبھی نمایاں سیاسی جماعتوں کے قائدین مختلف علاقوں میں اپنے امیدواروں کی انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔