عمران خان خواتین کو اختیارات دینے کی مثال ہیں،پی ٹی آئی رکن اسمبلی

ہمیں اپنے لباس اور ثقافت پر فخر ہے

پی ٹی آئی کی خواتین رکن پارلیمنٹ نے کہا ہے کہ ہم خواتین کو مضبوطی وزیراعظم عمران خان نے دی ہے۔

اسلام آباد میں پی ٹی آئی کی خواتین رہنما زرتاج گل،ملائیکہ  بخاری اور کنول شوزب نے پریس کانفرنس کی۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں اپنے لباس اور ثقافت پر فخر ہے اورخاتون ہونے کے ناطے اسلام نے یہ فخر دیا ہے۔

وزیراعظم سے متعلق انھوں نے کہا کہ عمران خان نے 1 کروڑ70 لاکھ ووٹ لیے ہیں اور وہ جہاں جاتے ہیں وہاں عزت دی جاتی ہے۔ عمران خان خواتین کو اختیارات دینے کی مثال ہیں اور جس طرح انھوں نے خواتین کو قوت بخشی ہے ویسا کسی نے بھی نہیں کیا ہے۔

ملائیکہ بخاری نے بتایا کہ باحیثیت خاتون اس کابینہ کا حصہ ہونے پر فخر کرتی ہوں۔کابینہ نے حقیقی اورعملی طور پر جو کام کئے ہیں اس کی کوئی نظیر نہیں ملتی ہے۔ ملک میں اسپیشل کورٹس کا قیام عمل میں آیا اور ہراسپتال میں اینٹی ریپ سیل بنائے گئے۔ریپ ریاست کے خلاف جرم ہے اور اس کے تحقیقات کے لیے مشترکہ انویسٹی گیشن ٹیمیں بنائی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ریپ کے ملزمان کے ان کیمرہ ٹرائلز بنائے گئے اور پاکستان کے قانون  کے اندر حکومت نے ریپ ٹیسٹنگ کاعمل تبدیل کردیا۔ اس سے پہلے کسی حکومت نے ایسا کام نہیں کیا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ موجودہ حکومت نے بچوں کی کردارکشی کے عمل کوعدالتوں میں ختم کیا۔ ان کیسز کو 4 ماہ کے عمل اور اپیل کو 6 ماہ میں ختم کیا جائے۔ قرآن پاک اور قانون میں خواتین کے حقوق درج ہیں اور ویمن پراپرٹی رائٹ کو پاس کیا گیا ہے۔ قانون سازی کےعمل سے قانون سازی سے یہ عمل یقینی بنتا ہے۔

یہ بھی بتایا گیا کہ وزیراعظم نے اینٹی ریپ سیل کے لیے بجٹ میں 100 ملین روپے مختص کئے ہیں۔ بجٹ میں درج ہے کہ اس حوالے سے مزید رقم بھی دی جائے گی۔

رکن اسمبلی کنول شوزب نے بتایا کہ وزیراعظم کے ساتھ ایسی باتیں منسوب کی جا رہی ہیں جو انہوں نے کی ہی نہیں۔ وزیراعظم نے ہمارے اور باہر کے کلچر کو بیان کیا اور کہا کہ صرف 1 فیصد کیسز رپورٹ ہورہے ہیں اور ہم ایک مہذب معاشرے میں رہتے ہیں۔

کنول شوزب نے کہا کہ وزیراعظم نے فیملی اسٹرکچر پر بات کی اور بتایا کہ پاکستان میں کوئی نائٹ کلبز نہیں ہوتے۔ وزیراعظم کی اس بات پر کچھ حلقوں نے اعتراض کیا اور کہا کہ وزیراعظم نے یہ کیسی بات کردی ہے۔

اس موقع پرزرتاج گل نے کہا کہ وزیراعظم عمران نے کہا ہے کہ پاکستان اپنے فوجی اڈے کسی ملک کو نہیں دے گا۔80 منٹ کے انٹرویو کو 12 سے 15 منٹ دکھایا گیا ہے۔ عمران خان نے ثقافت سے متعلق جو بات کی اس پر مخصوص حلقے نے ٹرینڈ شروع کردیا۔ خواتین سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ تحريک انصاف کی خواتين پارليمان ميں اہم کردار ادا کررہی ہيں۔ ہمارے مذہب نے ہمیں جتنی آزادی دی ہے اس پر فخرہے۔ سابقہ قبائلی علاقوں سے بھی خواتین پارلیمان کا حصہ بنیں۔

متعلقہ خبریں