عمران خان نے پارٹی کو اداروں پر تنقید کرنے سے روک دیا  

سابق وزیراعظم عمران خان نے پارٹی ارکان کو اداروں پر تنقید کرنے اور بیان دینے سے منع کرتے ہوئے ہدایات جاری کی ہیں کہ آئندہ کوئی بھی رہنما اداروں اور اسٹیبلشمنٹ کے خلاف کسی قسم کی مہم کا حصہ نہ بنے۔  
 ترجمان پنجاب حکومت مسرت جمشید چیمہ نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے ایک ویڈیو پیغام بھی جاری کیا ہے۔
ان کے مطابق ’چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی جانب سے ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ اداروں اور اسٹیبلشمنٹ کے خلاف کسی قسم کی تنقید کا حصہ نہ بنا جائے، نہ ہم پہلے اس مہم کا حصہ تھے نہ مستقبل میں ہوں گے۔‘  
انہوں نے مزید کہا کہ ’ماضی میں جو آٹھ ماہ کے دوران ہوا وہ اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ ہمارا مسئلہ نہیں تھا، وہ ایک شخصیت نے جو کچھ کیا وہ سب کو پتا ہے، وہ اب ادارے کا حصہ نہیں رہے اور ماضی بن چکے ہیں۔‘  
مسرت جمشید چیمہ نے وضاحت کی کہ ’ہمارا اداروں کے ساتھ نہ پہلے جھگڑا تھا نہ آئندہ ہوگا۔‘  
خیال رہے کہ وزیراعلٰی پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے چند روز قبل ترجمان پنجاب حکومت کو سابق آرمی چیف سے متعلق متنازع بیان دینے پر اظہار وجوہ کا نوٹس بھی جاری کیا تھا۔  
سابق وزیراعظم عمران خان نے بھی اس بات کا نوٹس لیتے ہوئے تمام ارکان کو ہدایات جاری کی تھیں۔  
مسرت جمشید چیمہ نے اپنے بیان کی وضاحت دیتے ہوئے مزید کہا کہ ’عمران خان جو ہدایات جاری کرتے ہیں ہم اس پر عمل کرتے ہیں۔‘
’کسی ایک شخص پر سوال اٹھانے پر اعتراض نہیں ہے لیکن کسی ایک شخص کا بوجھ ادارے پر لاد دینا عقل مندی نہیں۔‘  
انہوں نے کہا کہ ’ہم انفرادی طور پر مثبت تنقید پہلے کی طرح جاری رکھیں گے تاہم کسی منفی پروپیگنڈا کا حصہ نہیں بنیں گے۔‘  
انہوں نے سوشل میڈیا ٹیم کو بھی ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ ’مجھے امید ہے ہمارے آفیشل سوشل میڈیا ٹیم بھی عمران خان کی ہدایات پر عمل کرے گی۔‘