عید پر لوگ وطن آتے ہیں ن لیگی باہرجارہے ہیں،شہریار

چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی کا کہنا ہے کہ قانونی تقاضے پورے کئے بغیر شہبازشریف کو بیرون ملک نہیں جانے دیں گے، عید پر لوگ بیرون ممالک سے اپنے وطن آتے ہیں اور شریف فیملی کے تمام افراد باہر بیٹھے ہیں۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے رہنماء تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر یاسمین راشد کینسر کا مقابلہ کررہی ہیں وہ تو باہر نہیں گئیں مگر شہباز شریف بھاگے بھاگے انگلستان جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا مسلم لیگ ن ججوں کو خریدنے کیلئے رابطے کرتے تھے جبکہ سپریم کورٹ پر حملہ کرنے والے بھی یہی ہیں۔

 شہریارآفریدی کا کہنا تھا کہ نواز شریف بھارت جاکر حریت رہنماؤں سے نہیں ملے تھے، انہوں نے کہا کہ جب بھارت جاکر حریت رہنماؤں سے نہیں ملیں گے تو سوال اٹھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگی حکومت نے ریاستی اداروں کو کشمیر پر بائی پاس کیا تھا شہریار آفریدی نے سوال اٹھایا کہ اگر ن لیگ کے قیادت کرپٹ نہیں ہے تو ملک سے کیوں فرار ہیں۔

رہنماء تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ بیک ڈور ڈپلومیسی ضرور ہونی چاہیے مگر ہمیں اقوام متحدہ کے قراردادوں سے ایک انچ پیچھے نہیں ہٹنا چاہیے قوم نے فیصلہ کرنا ہے کہ ہم نے اجتماعی مفادات پر ایک ہونا ہے۔

شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ ہم پر اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے دباؤ تھا مگر ہم کسی کے دباؤ میں نہیں آئے، انہوں نے کہا کہ کشمیر کے حوالے سے جو بھی فیصلہ ہوا اس میں کشمیری شریک ہوں گے۔

امریکا کو فوجی اڈے دینے کے خبروں کے حوالے سے شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ ہمارا مؤقف اس حوالے سے واضح ہے، وزیراعظم پہلے دن سے اس کیخلاف ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ تمام عالمی اسلام کو اسرائیلی مظالم کیخلاف آواز اٹھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم متعلقہ بین الاقوامی فورمز پر معاملہ نہیں اٹھائیں گے تو ہمارا کیس کمزور ہوگا۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنماء مسلم لیگ ن طلال چوہدری کا کہنا تھا کہ انٹرنیشنل میڈیا سے خبریں آرہی ہے کہ کشمیر پر مذاکرات ہورہے ہیں، انہوں نے کہا کہ بحیثیت پاکستانی میرا حق ہے کہ مجھے معاملات سے متعلق آگاہ کیا جائے۔

طلال چوہدری کا کہنا تھا کہ مذاکرات جو بھی کررہے ہیں مگر ملبہ سیاسی قیادت پر گرے گا، کشمیر اسرائیل اور افغانستان سے متعلق معاملات پر قوم کو اعتماد میں لیا جائے قوم کو اندھیرے میں رکھنا قوم کے ساتھ زیادتی ہوگی۔

رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ نئے پاکستان کے باتیں سن سن کر کان پک گئے مگر حقیقت یہ ہے کہ عمران خان کے پاس  ٹیم ہی نہیں ہے۔

طلال چوہدری کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے پاس ملک کا بڑا صوبہ پنجاب چلانے کیلئے کوئی اہل بندہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ جاوید لطیف کا مقدمہ پڑھ کر سر شرم سے جھک جاتا ہے حکمرانوں نے اقتدار بچانے کیلئے اداروں کو سیاست میں جھونک دیا ہے۔

شہباز شریف کی بیرون ملک روانگی سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ اگر میں کلیئر ہوں تو یہ میری مرضی ہے کہ میں کہیں سے بھی اپنا علاج کراؤں یہ کسی اور کا اختیار نہیں کہ وہ اس بات کا فیصلہ کرسکے۔

طلال چوہدری کا کہنا تھا کہ وفاقی وزراء عدالتی فیصلوں پر تنقید کررہے ہیں جبکہ چینی اور آٹا چور حکومت میں بیٹھے ہیں، انہوں نے دعویٰ کیا کہ حکومت نے جہانگیر ترین کو این آر او دیدیا ہے۔

متعلقہ خبریں