غریب مزدورکے3بچے اتائی کےعلاج کی بھینٹ چڑھ گئے

اتائی گرفتار، کلینک سیل

ملتان میں ایک بھٹہ مزدور کے 3 معصوم بچے مبینہ طور پر اتائی معالج کے ہتھے چڑھ کر غلط دوائی کے باعث جان گنوا بیٹھے۔

پولیس کے مطابق ملتان کے نواحی علاقے حامد پور کنورا میں واقع ایک نجی کلینک کے اتائی ڈاکٹر کی غفلت کی وجہ سے بھٹہ مزدور خادم حسین کے تینوں بچوں کی حالت غیر ہوئی جس کے بعد وہ انتقال کرگئے۔

اتائی کو گرفتار کرکے اس کا کلینک سیل کردیا گیا ہے جبکہ پوسٹ مارٹم کی رپورٹ آنے کے بعد ان اموات کے ذمہ دار کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

خادم حسین نے بتایا ہے کہ تینوں بچوں کو بخار ہوا تھا جس پر انہیں صبح 8 بجے کے قریب مقامی اتائی کی دی گئی دوائی والی پڑیا دی گئی تاہم اس کے پانچ سے سات منٹ بعد ہی ان تمام کو موشن اور الٹیاں شروع ہوگئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس صورتحال کے پیش نظر بچی کو اسپتال لے جایا گیا لین وہ فوت جانبر نہ ہوسکی۔ بچوں کے والد نے مزید بتایا کہ اسی دوران دیگر 2 بچوں کو ریسکیو 1122 والے لے گے لیکن بڑا بچہ راستے میں فوت ہوگیا جبکہ دوسرا رات نشتر اسپتال میں انتقال کر گیا۔

دریں اثناء وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے حکام سے 24 گھنٹوں میں رپورٹ طلب کر لی ہے۔

متعلقہ خبریں