غزہ پر اسرائیلی حملے، شہداء کی تعداد 53 ہوگئی

غزہ پر اسرائيل کی وحشيانہ بمباری جاری ہے، شہداء کی تعداد 56 ہوگئی، جاں بحق افراد میں 14 بچے بھی شامل ہيں، ایک ہزار سے زائد افراد زخمی ہیں، اسپتال زخميوں سے بھرگئے، فلسطينی مزاحمتی تنظيم حماس کے تل ابيب پر جوابی راکٹ حملوں میں 3 یہودی ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے، اشکیلون ميں آئل ريفائنرہ تباہ ہوگئی، ايئرپورٹ کو بند کرديا گيا۔

مسجدِ اقصیٰ پر اسرائیلی حملے کا بدلہ لینے کیلئے حماس نے تل ابيب پر راکٹ بر ساديے، شام کی سرحد سے صيہونيوں پر سيکڑوں راکٹ فائر کئے گئے۔

حماس کے حملے سے کئی یہودی آباد کار ہلاک اور بہت سے زخمی ہوئے، اشکيلون ميں اسرائیلی آئل ریفائنری تباہ ہوگئی جبکہ ایئرپورٹ بھی بند کردیا گیا۔

اسرائيلی فوج نے جواباً کارروائی کرتے ہوئے اپنی ہی حدود ميں عمارت کو تباہ کرديا، تيرہ منزلہ عمارت ٹوئن ٹاورز کی طرح زمین بوس ہوگئی، عمارت کی تباہی کے وقت علاقے ميں بجلی معطل تھی، کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، مکينوں کو پہلے ہی دوسری عمارتوں ميں منتقل کرديا گيا تھا۔

غزہ پر اسرائیل کے فضائی حملوں میں 14 بچوں سمیت 56 فلسطینی شہید اور ایک ہزار سے زائد زخمی ہوگئے، کئی عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں۔

دوسری جانب اسرائيلی آباد کاروں نے تل ابيب کے وسطی علاقے لُد ميں فلسطينی کو گولی مار کر شہيد کرديا، جس کے بعد ہزاروں فلسطینی سڑکوں پر نکل آئے، اور اسرائيلی پوليس کی گاڑيوں کو آگ لگا دی، اسرائيلی فورسز نے ان پر گولياں برسائيں۔

لُد کے ميئر کا کہنا ہے حالات خانہ جنگی کی جانب جا رہے ہيں، شہر ميں ہنگامی حالات نافذ کر دی گئی ہے۔

اسرائیل نے تل ابيب ايئر پورٹ بند کرکے ملک بھر ميں ہائی الرٹ جاری کرديا گيا ہے۔ غزہ کی سرحد پر مزيد فوجی تعينات کرديے گئے ہيں جبکہ 5 ہزار فوجيوں کو ريزرو رہنے کا حکم ديا گيا ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے مظلوم فلسطينيوں پر مزيد حملوں کی دھمکی دیدی۔ بنیامین نیتن یاہو نے کہا کہ غزہ پر حملوں کا سلسلہ مزيد وسيع کريں گے، اب حماس پر ايسے حملے کئے جائيں گے جس کا سوچا بھی نہ ہوگا۔

فرانس نے حماس پر اسرائيلی حملوں کی بھرپور حمايت کی ہے، ايران نے اپنے ملک ميں سيکيورٹی ہائی الرٹ کردی۔

متعلقہ خبریں