فائزر کی 1کروڑ30 لاکھ خوراکیں ملیں گی،ڈاکٹرفیصل

فائل فوٹو

معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل کا کہنا ہے کہ پاکستان کو فائزر کی 1 کروڑ 30 لاکھ خوراکیں ملیں گی، جس کیلئے معاہدہ کرلیا گیا ہے۔

معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے بتایا کہ کرونا سے بچاؤ کی ویکسین کیلئے فائزر اور بائیو این ٹیک سے معاہدے ہوگیا ہے۔ فائزر ویکسین کی خوراکیں 2021 کے دوران ہی فراہم کی جائیں گی۔

واضخ رہے کہ کویکس کے ذریعے پاکستان کو پہلے 1 لاکھ فائزر ویکسین ملی تھیں۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ کرونا سے بچاؤ کی فائزر ویکسین کمزور قوت مدافعت والے افراد کو رپورٹس دکھا کر لگائی جا رہی ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے این آئی ایچ کا دورہ کیا اور ویکسین سینٹر کے انتظامات کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر این آئی ایچ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر میجر جنرل عامر اکرام بھی موجود تھے۔ رپورٹ کے مطابق نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) میں 57 ممالک کے 600 سے زائد سفارت کاروں کی ویکسینیشن کی جاچکی ہے۔

جاری کردہ بیان کے مطابق فائزر پاکستان اور نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کے مابین فائزر بائیو ٹیک (بی این ٹی 162 بی 2) کی ایک کروڑ 30 لاکھ ویکسین فراہم کرنے کے معاہدے پر دستخط ہوئے ہیں، جس کی فراہمی کا منصوبہ 2021 کے دوران کا ہے۔

قبل ازیں فائزر پاکستان کے کنٹری منیجر سید محمد وجیہہ الدین نے ایک بیان میں کہا کہ ہمیں پاکستانی حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنے اور عوام کے لیے کووڈ 19 کی ویکسین لانے کے مشترکہ مقصد پر گامزن ہونے پر فخر ہے۔

این آئی ایچ کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ قوانین کے مطابق صرف پاکستانی شہری مفت ویکسین کے حقدار تھے لیکن گزشتہ ماہ اقوام متحدہ کے ایجنسیوں کے سفارت کاروں اور ملازمین کو اس سہولت سے فائدہ اٹھانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا۔

متعلقہ خبریں