فلسطینی سفیر کا اسرائیلی جارحیت کے خلاف حمایت پر پاکستانیوں کا شکریہ

اتوار 23 مئی 2021 18:17

فلسطین کے سفیر کا کہنا تھا کہ21 مئی کے یوم یک جہتی فلسطین کا دن کبھی فراموش نہیں کریں گے (فوٹو: فلسطین ایمبیسی )

پاکستان میں فلسطین کے سفیر احمد ربیعی نے اسرائیلی جارحیت کے خلاف فلسطینیوں کی بھرپور حمایت پر پاکستانیوں کا شکریہ ادا کیا ہے۔
اہل پاکستان کے نام اپنے کھلے خط میں احمد ربیعی نے کہا ہے کہ فلسطین کے عوام، مردوزن، بچوں، بزرگوں کی طرف سے میں پاکستان کے عوام، اس کی عظیم فوج، تمام معزز اعلی عہدیداروں، صدر اور وزیراعظم پاکستان، وزیر خارجہ، تمام وزرا، ارکان پارلیمان اور سیاسی جماعتوں کے قائدین کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے فلسطینیوں اورایک خودمختار اور آزاد ریاست فلسطین کے قیام کی جدوجہد میں ان کی بھرپور حمایت کی ہے۔
میں تہہ دل سے آپ کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ آپ نے واشگاف اور شاندار الفاظ میں فلسطینی جدوجہد آزادی کی حمایت کرنے کے علاوہ نہتے اور بے گناہ فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی ظلم وبربریت اور جارحیت کی مذمت کی اور مسئلہ فلسطین کے حل کے فوری اور ٹھوس اقدامات اٹھانے کے لیے عالمی برادری پر زور دیا۔ ‘
مزید پڑھیں
خط میں مزید کہا گیا ہے کہ جنگ بندی، کشیدگی اور ظلم و بربریت کو ختم کرانے کے لئے ’او آئی۔سی‘ اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے ہنگامی اجلاس بلانے کے لیے پاکستان کی کوششوں کو بڑے پیمانے پر سراہا گیا ہے۔
’اتفاق رائے پیدا کرنے، رائے عامہ ہموار کرنے اور اس بحث کو صحیح رُخ پر استوار کرنے میں پاکستان نے ایک انتہائی اہم کردار ادا کیا ہے۔ یہ تاریخی کردار نہ صرف فلسطینی عوام بلکہ پوری دنیا یاد رکھے گی اور اس تاریخ کو آنے والی نسلیں ہمیشہ یاد رکھیں گی۔ ‘
فلسطین کے سفیر کا کہنا تھا کہ ’ایک اور تاریخی دن جسے فلسطینی کبھی فراموش نہیں کرپائیں گے، 21 مئی کا یوم یک جہتی فلسطین کا دن ہے ، فلسطینیوں سے اظہار یک جہتی اور مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں بے گناہ فلسطینیوں پر اسرائیلی بربریت اور ظالمانہ حملوں کی مذمت کے لیے یہ فیصلہ وزیراعظم پاکستان نے کیا۔ پاکستان کی پارلیمنٹ نے متفقہ قرارداد منظور کی جس میں فلسطینی عوام پراسرائیل کے ’منظم جبر و استبداد‘ کی مذمت کرتے ہوئے اقوام متحدہ سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا۔
انہوں نے کہا کہ اگرچہ غزہ میں جنگ بند ہوگئی ہے لیکن آزادی کے حصول کی ہماری جدوجہد ابھی جاری ہے۔ ’اِن شاءاللہ اپنے پاکستانی بھائیوں کے ساتھ مل کر اوران کے شانہ بہ شانہ ہم فلسطین کو آزاد کرائیں گے اور فلسطین کے القدس الشریف دارالحکومت میں مسجد اقصی میں مل کر نماز ادا کریں گے‘