فلسطین: آنسوگیس شیلز میں پھولوں کا خوبصورت باغ

فوٹو: یروشلم پوسٹ

فلسطینی خاتون نے خوف اور دہشت کی علامت سمجھے جانے والے اسرائیلی ٹیئر گیس یا (آنسو گیس) میں خوشبودار پھول لگاکر امن کا پیغام دے رہی ہیں۔

خاتون فلسطین کے علاقے رملہ کے قریب ایک چھوٹے سے گاؤں بلین کی رہائشی ہیں جو اسرائیلی فوجیوں کی طرف سے مقامی فلسطینیوں پر پھینکے جانے والے آنسو گیس گرینیڈز کے خالی خول جمع کرتی ہیں اور ان خولوں میں وہ خوش نما پھولوں کے پودے لگاتی ہیں۔

اسرائیل کی جانب سے پھینکے گئے شیلز سے فلسطینی خاتون نے باغ بنا رکھا ہے۔ باغ اس علاقے میں ہے جس پر فلسطینیوں نے اپنے ملکیت کے دعوے کو 3 سال قبل کورٹ میں دائر کیا تھا۔ یہ علاقہ اسرائیلی متنازع دیوار کی تعمیر کے راستے میں آتا ہے۔

فلسطینی خاتون کے اس منفرد باغ کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکی ہیں۔ گرینیڈ میں پنپتے ہوئے نازک پودے امن کی خواہش کی ترجمان اور عالمی برادری کے لیے واضع پیغام ہیں۔

یاد رہے کہ اسرائیل نے مغربی اردن کے کنارے اپنی سرحد کے مقبوضہ فلسطینی علاقے میں 2002ء میں خاردار باڑھ لگانے کے ساتھ ساتھ ایک سرحدی دیوار کی تعمیرشروع کی تھی۔