فلسطین نے اسرائیل سے10لاکھ کروناویکسین معاہدہ منسوخ کردیا

فائل فوٹو

فلسطینی اتھارٹی نے اسرائیل سے کرونا ویکسین کی 10 لاکھ خوراکیں لینے کا معاہدہ منسوخ کردیا۔

العربیہ نیوز کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی اتھارٹی کا کہنا ہے کہ اسرائیل سے ویکسین کی خوراکیں اس لیے وصول نہیں کررہی کیونکہ ویکسین کی ان خوراکوں کی طبی میعاد ختم ہونے کے قریب ہے۔

اس سے قبل اسرائیل نے جمعہ کو اعلان کیا تھا کہ فلسطینی اتھارٹی کو کرونا وائرس ویکسین کی 10 لاکھ خوراک فراہم کرے گا۔

وزیر اعظم ہاؤس، وزارت صحت اور اسرائیل میں وزارت دفاع کی طرف سے جاری ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی نے کرونا ویکسین کے تبادلے کے معاہدے پر اتفاق کیا ہےجس کے مطابق اسرائیل 10 لاکھ کے قریب خوراکیں فلسطینی اتھارٹی کو منتقل کرے گا۔

اسرائیلی اخبار “ہارٹز” کی خبر کے مطابق اسرائیل نے آئندہ دنوں میں امریکی فائزر ویکسین کی 12 لاکھ خوراکیں فلسطینی اتھارٹی کو منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس معاہدے کو منسوخ کرنے سے پہلے فلسطینی وزیر صحت می الکیلا نےاعلان کیا کہ حکومت امریکی کمپنی” فائزر ” کے ساتھ معاہدہ کرچکی ہے۔

الکیلا نے مزید کہا کہ فلسطینی حکومت نے پہلے “فائزر” کے ساتھ 40 لاکھ خوراکیں خریدنے پراتفاق کیا تھا لیکن امریکی کمپنی نے کہا ہے کہ وہ اس سال کے اکتوبر یا نومبر سے پہلے اس آرڈر کی فراہمی شروع نہیں کرسکےگی۔

متعلقہ خبریں