قاسم سوری کیخلاف اپوزیشن کاتحریکِ عدم اعتماد سےدستبردارہونےکاامکان

اپوزيشن ڈپٹی اسپيکر قومی اسمبلی قاسم سوری کےخلاف تحريک عدم اعتماد سے پيچھے ہٹنے لگی ہے۔

سماء کے نمائندہ خصوصی نعیم اشرف بٹ نے بتایا کہ اپوزیشن نے ڈپٹی اسپیکر کے خلاف مطلوبہ نمبرز حاصل نہ ہونے پر خاموشی اختيار کرنےکا فيصلہ کرليا ہے۔ اپوزيشن کو تحريک عدم اعتماد کے ليے172 ارکان کی حمايت کی ضرورت ہے تاہم اپوزيشن جماعتوں کے پارليمانی ليڈرز نے اب تک کسی رکن قومی اسمبلی کو تحريک عدم اعتماد پر اعتماد ميں نہيں ليا ہے۔

اپوزیشن رہنماؤں کا کہنا ہے کہ ہم نے تحريک عدم اعتماد محض احتجاج ريکارڈ کروانے کے ليے جمع کروائی تھی۔ڈپٹی اسپيکر کے خلاف تحريک سے توجہ ہٹانے کے ليے اسپيکر کے خلاف عدم اعتماد کا فيصلہ کيا گيا ہے۔

اپوزیشن نے10جون کو ڈپٹی اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کروائی تھی۔ قومی اسمبلی میں اپوزيشن کے ارکان کی تعداد 160ہے اور تحريک عدم اعتماد کل بروز جمعہ 18 جون تک ايوان ميں پيش کی جاسکتی ہے۔ رولز کے مطابق 18جون کو تحریک کو ایوان میں ووٹنگ کے لیے پیش کرنا ہے۔

متعلقہ خبریں