قومی احتساب ترمیمی آرڈیننس میں مزید توسیع کی قراردادمنظور

National Assembly

فائل فوٹو

قومی اسمبلی اجلاس میں اپوزیشن کی شدید مخالفت اور احتجاج کے باوجود قومی احتساب ترمیمی آرڈیننس میں مزید 120 دن کی توسیع کی قرارداد منظورکرلی گئی۔

جمعہ کو اسپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس شروع ہوتے ہی نون لیگ کےشیخ فیاض الدین نے کورم کی نشاندہی کردی۔ اسپیکر کی ہدایت پر اراکین کی گنتی کی گئی تو کورم نامکمل نکلا۔اسپیکر نے کورم مکمل ہونے تک اجلاس کی کارروائی ملتوی کردی۔ کورم پورا ہونے پر اجلاس کی کارروائی دوبارہ شروع ہوئی ۔ قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے ن لیگ کے رہنما احسن اقبال نے کہا کہ پنجاب کے بلدیاتی اداروں کو 2 ماہ سے بحال نہیں کیا گیا۔ اگر اداروں کو بحال نہ کیا گیا تو وزیراعلیٰ پنجاب کے خلاف سپریم کورٹ کارروائی کرسکتی ہے۔

علی محمد خان نے نیب ترمیمی آرڈیننس میں 4 ماہ کی توسیع کی قرارداد پیش کی۔ کورم کی نشاندہی اور اپوزیشن کی شدید مخالفت اور احتجاج کے باوجود اسپیکر نے قرارداد کی منظوری حاصل کرلی۔

قرارداد منظور ہونے کے بعد اسپیکر نے ارکان کی گنتی کی ہدایت کردی اور کورم پورا نہ ہونے پر اجلاس غیرمعینہ مدت تک ملتوی کردیا گیا۔

متعلقہ خبریں