لاہور:شہیداہلکارکاکانسٹیبل بیٹابھی جام شہادت نوش کرگیا

قیصر ڈاکوؤں کی فائرنگ سے شہید ہوا

لاہورميں ایک شہيد پوليس اہلکار کا بيٹے نے بھی فرض کی راہ ميں اپنی جان کی قربانی دے دی۔

پولیس کے مطابق 24 سالہ قيصر تھانہ سندر ميں تعينات تھا اور ڈکيتی کی اطلاع پر پٹرولنگ ٹيم کے ہمراہ موہلنوال کے علاقے ميں پہنچا تو يکے بعد ديگرے 3 وارداتيں کرنے والے ڈکيتوں کے گروہ نے پوليس پارٹی کو ديکھتے ہی فائرنگ کردی۔

ڈاکوؤں کی فائرنگ سے گولی قيصر کے سينے ميں جا لگی جس سے وہ جام شہادت نوش کرگیا۔ اس کے والد اللہ دتہ بھی پولیس میں کانسٹیبل تھے اور اپنی ڈیوٹی کے دوران شہید ہوگئے تھے۔

 

قیصر کے بھائی کانسٹیبل فیصل نے بتایا کہ اللہ دتہ سن 2011 ميں داتا دربار کے قريب ہونے والے بم دھما کہ ميں شہيد ہوئے تھے۔

پوليس حکام کا کہنا ہے کہ واردات میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرنے کے ليے ٹيم تشکيل ديدی گئی ہے اور شہيد کا خون رائيگاں نہيں جانے دیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں