لاہور: خواجہ سراء کے اندھے قتل کا معمہ حل ہوگیا

لاہور ميں ہونیوالے خواجہ سراء کے قتل کا معمہ حل کرتے ہوئے پولیس بظاہر اصل قاتل تک پہنچ گئی۔

لاہور میں خواجہ سراء چنوں کی جلی ہوئی لاش چند روز قبل نشتر کالونی کے علاقے سے ملی تھی۔ پولیس کے مطابق مختلف پہلوؤں پر تفتيش ہوئی تو انکشاف ہوا کہ يہ محض حادثہ نہيں بلکہ ایک قتل ہے اور قاتل کوئی اور نہیں بلکہ مقتول کا قریبی دوست ہے۔

ملزم نے شواہد مٹانے کیلئے لاش تو جلادی تھی لیکن مقتول کا فون پر آخری رابطہ ملزم سے ہوا تھا، جس بنیاد پر پولیس ملزم تک پہنچ گئی اور قتل کی گتھی سلجھا لی گئی۔

مزید جانیے: لاہور میں خواجہ سرا کی جلی ہوئی لاش ملی ہے، پولیس

دوران تفتیش ملزم نے اعتراف کرلیا ہے کہ مقتول نے اس سے چند ہزار روپے کا قرض لیا تھا لیکن واپسی کے حوالے سے ٹال مٹول کر رہا تھا، جس پر طیش میں آکر اس نے چنوں کو قتل کردیا اور پھر اس کی لاش نذر آتش کردی تاکہ وہ پہچانی نہ جاسکے اور دیگر شواہد بھی مٹ جائیں۔

پوليس کا کہنا ہے کہ کيس کی تفتيش ميں تاحال کسی اور کے ملوث ہونے کے شواہد نہيں ملے۔ قتل کرنے کے بعد ملزم مقتول کے آرٹيفشل زيورات اور نقدی ليکر غائب ہوگیا تھا۔

ملزم پیشے کے اعتبار سے ایک درزی ہے اور اس کی مقتول سے دوستی لاک ڈاؤن کے دوران ہوئی تھی تاہم لین دین کے تنازع پر وہ دوستی دشمنی میں تبدیل ہوکر قتل تک پہنچی۔

متعلقہ خبریں