لاہور دھماکا: گاڑی پارک کرنےوالا ملزم گرفتار

فوٹو: آن لائن

لاہور دھماکے کی جگہ گاڑی کھڑی کرنے والے شخص کو قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں نے ملزم کو راولپنڈی سے گرفتار کرلیا۔

تفتیشی ذرائع کے مطابق جوہر ٹاؤن دھماکے میں ملوث ملزم ڈیوڈ پال نےانکشاف کیا ہے کہ دہشتگردی میں استعمال ہونے والی گاڑی پانچ روز قبل خریدی گئی تھی۔

ڈیوڈ پال نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو بتایا کہ گاڑی کا سودا ساڑھے 9 لاکھ روپے میں طے پايا اور 50 ہزار روپے ٹوکن ادا کیا باقی پیسے دو روز بعد شريک ملزم ضیاء خان نے خود ادا کیے۔

قانون نافذ کرنے والے اہکاروں کے مطابق گرفتار ہونے والے شخص کی شناخت عید گل کے نام سے ہوئی ہے، پال ڈیوڈ نے دھماکے میں استعمال ہونے والی گاڑی سات روز پہلے گجرنوالہ سے خریدی اور عید گل کو دی تھی۔

عید گل گاڑی کےہمراہ 23 جون کو 9 بجکر 16 منٹ پر ليکر لاہور میں داخل ہوا اور 10 بجکر 28 منٹ پر جوہر ٹاؤن میں ایک گھر کے باہر پارک کرکے چلا گیا۔ جسکے چند لمحوں بعد دھماکہ ہوا، ملزم عید گل کو مزید تفتیش کیلئے لاہور منتقل کردیا گیا ہے۔

لاہور دھماکا: ملزم کی ساتھی خاتون بھی گرفتار

قانون نافذ کرنے والے اداروں کے مطابق بارود سی این جی سلنڈر میں نصب کيا گیا تھا۔

دوسری جانب گاڑی شہرمیں لانے والے شخص کی تلاش ابھی کی جارہی ہے جبکہ چار روز بعد وقوعہ کو جانيوالے راستوں کو رہائشيوں کيلئے کھول ديا گيا ہے۔

اس سے قبل پولیس نے مبینہ ملزم ممکنہ طور پر کراچی کے علاقے محمود آباد کا رہائشی ہے۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے رات گئے ملزم کے گھر پر چھاپہ مار کر تلاشی لی اور چند دستاویزات قبضے میں لے لی ہیں۔ چھاپے کے دوران کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔

ابتدائی تفتیش میں معلوم ہوا ہے کہ پیٹرپال ڈیوڈ بحرین میں اسکریپ اور ہوٹل کا کاروبار کرتا رہا ہے اور اس نےاپنی خاندان کو2010 میں بحرین سے پاکستان منتقل کیا۔ ملزم ڈیڑھ ماہ پہلے بحرین سےکراچی پہنچا تھا اور اس نے ڈیڑھ ماہ کے دوران 3 مرتبہ لاہور کا دورہ کیا۔

تحقیقات میں یہ بھی سامنے آیا ہے کہ 3 بار لاہور جانے کے دوران ڈیوڈ پال مجموعی طور پر27 روز لاہور میں رہا اور لاہور میں قیام کے دوران مختلف افراد سے رابطوں کے شواہد بھی ملے ہیں۔ پاکستان آنے کے دوران ڈیوڈ کا امیگریشن ڈیٹا حاصل کرلیا گيا ہے۔

جمعہ کو لاہور کے ہوائی اڈے سے کراچی جانے والی پرواز سے ایک مشتبہ مسافر کو آف لوڈ کرکے حراست میں لیا گیا۔ تفتیشی ذرائع کے مطابق شبہ ہے کہ زیر حراست شخص کا تعلق لاہور جوہر ٹاؤن دھماکے سے ہے اور وہ طیارے کے ذریعے کراچی فرار ہونے کی کوشش کر رہا تھا اور اس کو حراست میں لے کر تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا۔

یاد رہے کہ لاہور جوہر ٹاؤن دھماکے کی تفتیش میں گرفتار ملزم ڈیوڈ پال کی نشاندہی پر ساتھی خاتون اور ذاتی ملازم کو بھی قانون نافذ کرنے والے اداروں نے حراست میں لے لیا۔

واضح رہے کہ بدھ 23 جون کو لاہور کےعلاقے جوہر ٹاؤن میں دھماکا ہوا تھا جس میں 3 افراد جاں بحق اور 24 زخمی ہوئے تھے۔ دھماکے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے جبکہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کی جیو فینسنگ بھی مکمل کرلی ہے۔

متعلقہ خبریں

لاہور دھماکا، جوہر ٹاؤن دھماکا، ڈیوڈ پال، عید گل