لاہور کا عالمگیری دروازہ کیوں بنوایاگیا تھا؟

والڈ سٹی اتھارٹی نے مرمت کا کام مکمل کرلیا

Your browser does not support the video tag.

وقت اور حالات کی سختیوں کے باعث شاہی قلعے کے عالمگیری دروازے کو پہنچنے والے نقصان کی مرمت کر دی گئی ہے اور اس دوران اس بات کا خاص خیال رکھا گیا ہے کہ دروازے کی اصل شکل برقرار ہے۔

شاہی قلعے کی شان  یہ عالمگیری دروازہ بادشاہی مسجد کے مرکزی دروازے کےعین سامنے مضبوطی  کے ساتھ  آج بھی موجود ہے۔ یہ دروازہ اورنگ زیب عالمگیر نے سن 1674 میں بنوایا تھا اور اسے اتنا بڑا بنانے کا مقصد اسے ہاتھیوں کی آمدروفت کے لیے ممکن بنانا تھا۔

محققین کے مطابق کافور کی لکڑی سے بنائے گئے اس دروازے کی اونچائی لاہور میں موجود تمام دروازوں میں سب سے زیادہ ہے اور شہنشاہ اورنگ زیب عالمگیر ہاتھی پر بیٹھ کر اس دروازے سے گزرتے ہوئے بادشاہی مسجد میں داخل ہوا کرتے تھے۔

خستہ حالی کی باعث یہ دروازہ طویل عرصے سے  لوگوں کے  لیے بند ہے، گو والڈ سٹی اتھارٹی کی جانب سے  اس کے اندرونی حصے اور فریسکو کو  پہنچنے والے نقصان کی مرمت کا کام گزشتہ دنوں مکمل  کر لیا گیا لیکن ابھی تک اسے  کھولے جانے کا فوری کوئی امکان نہیں ہے۔

تازہ ترین

پاکستان میں 40فیصد تعلیم یافتہ خواتین بیروزگار ہیں، رپورٹ
جرمنی: کرسچن ڈيموکريٹک پارٹی کے طویل اقتدار کا خاتمہ
وزیرخزانہ کا آئی ایم ایف پروگرام جاری رکھنے کاعزم
شہبازشریف،سلیمان شہباز کی بریت کی خبر غلط ہے، شہزاداکبر