ملک میں مثبت کرونا کیسزکی شرح 1.90 فیصد ہے

Corona

فوٹو: اے ایف پی

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے بتایا ہے کہ 1 دن میں 39 افراد کرونا وائرس کے باعث  انتقال کرگئے۔ان میں سے 17 مریضوں کا انتقال وینٹیلیٹرپر ہوا۔

جمعہ کو این سی او سی نے بتایا کہ 24  گھنٹوں میں 1 ہزار 43 نئے کرونا کیسز رپورٹ ہوئے۔ ملک میں مثبت کرونا کیسز کی شرح  1.90 فیصد ہے۔کرونا کے باعث سب سے زیادہ پنجاب میں 17 اموات، سندھ میں 14 اموات،خیبرپختونخوا میں 5 اموات ہوئیں۔بلوچستان میں 3 اموات ہوئیں۔ کرونا سےمجموعی اموات کی تعداد 21 ہزار 913 ہوگئی ہے۔

این سی او سی نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 54 ہزار 647 ٹیسٹ کئے گئے۔ ملک میں کرونا کے فعال کیسز کی تعداد35 ہزار 809 ہوگئی ہے۔کرونا سے صحت یاب ہونےوالوں کی تعداد 8 لاکھ 88 ہزار 505 ہے۔ ملک بھر میں کرونا وائرس کے مجموعی کیسز کی تعداد 9 لاکھ 46 ہزار 227 ہوگئی ہے۔

اس وقت ملک کے 639 مختلف اسپتالوں میں 2 ہزار 674 مریض زیرعلاج ہیں۔پشاور میں 20 فیصد، ملتان میں 38 فیصد،لاہور میں 20 فیصد، بہاولپور میں 26 فیصد وینٹیلیٹرز بھرچکے ہیں۔ کراچی میں 25 فیصد، ایبٹ آباد میں 28 فیصد، ملتان میں 24 فیصد اور گلگت میں 30 فیصد آکسیجن بیڈز پر مریض موجود ہیں۔

بدھ کو سماء کے پروگرام نیا دن میں بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر تیمور تالپور نے بتایا ہے کہ جو افراد کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین نہیں لگوائیں گے، ان کی موبائل فون سمز بند کرنے کےعلاوہ انھیں شوکاز نوٹس جاری کئے جائیں گے۔ اگر وہ شوکاز نوٹس پر بھی ویکسین نہیں لگواتے ہیں تو اُن کی نوکری کوبھی خطرہ ہوگا۔

تیمور تالپور نے وضاحت دی کہ حکومت نے ویکسین لگوانے کے لیے کوئی ڈیڈ لائن نہیں دی ہے تاہم شہریوں کو چاہئے کہ جلد سے جلد ویکسین لگوالیں۔ جولائی کے پہلے ہفتے تک ڈیڈ لائن آنے کی امید ہے۔

اس سے قبل صوبائی وزیراطلاعات ناصر حسین شاہ نے پیر کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ سندھ حکومت اس بات کے لیے کوشاں ہے کہ عوام کو ہر جگہ ویکسینیشن کا اہتمام کیا جائے تاہم جو شہری ویکسین نہیں لگوائے گا بالآخر اس کی فون سم بند کردی جائےگی۔