میں وزیراعظم پاکستان، فلسطین کے ساتھ کھڑا ہوں، عمران خان

مسئلہ فلسطین پر مسلم اُمہ کو متحد ہونا ہوگا، وزیر خارجہ

وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹر پر فلسطین سے اظہار یکجہتی کردیا۔ اپنے پيغام ميں لکھا کہ ’’میں پاکستان کا وزیراعظم ہوں اور فلسطین کے ساتھ کھڑا ہوں‘‘۔ ساتھ ہی نامور یہودی دانشور نوم چومسکی کی پوسٹ بھی شیئر کردی۔ وزير خارجہ شاہ محمود قريشی کہتے ہيں کہ مسئلہ فلسطين پر مسلم اُمہ کو متحد ہونا ہوگا۔

اسرائیل نے رمضان المبارک کے آخری عشرے کی طاق رات میں مسجد اقصیٰ میں عبادت کرنے والوں پر حملہ کیا، فائرنگ اور گرینیڈ حملوں میں 300 سے زائد فلسطینی زخمی ہوگئے، جس کے بعد کئی شہروں میں جھڑپوں کا آغاز ہوا، فائرنگ کے واقعات میں کئی فلسطینی شہید ہوئے۔

جس کے بعد فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے اسرائیل کو الٹی میٹم دیا، الٹی میٹم کے خاتمے پر راکٹ حملے کئے گئے، اسرائیل نے ایک بار پھر شہری آبادی کو نشانہ بنایا اور بمباری کردی۔

دو روز سے جاری فضائی حملوں میں 53 افراد شہید اور ایک ہزار سے زائد زخمی ہوگئے، شہداء میں 14 بچے بھی شامل ہیں جبکہ درجنوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں۔

وزیراعظم عمران خان نے فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ ميں وزيراعظم پاکستان ہوں، ہم فلسطين کے ساتھ کھڑے ہيں۔

مزید جانیے: غزہ پر اسرائیلی حملے، شہداء کی تعداد 53 ہوگئی

عمران خان نے صيہونی دہشت گردی کے خلاف آواز بُلند کرتے ہوئے قوم کے جذبات کی ترجمانی کی۔ ٹوئٹر پر لکھا پوری قوم غزہ کے مسلمانوں کے ساتھ کھڑی ہے۔

انہوں نے یہودی دانشور نوم چومسکی کی ایک پوسٹ بھی شيئر کی۔

وزير خارجہ شاہ محمود قريشی نے بھی فلسطين ميں انسانيت کی پامالی کو ناقابلِ قبول قرار ديا اور کہا کہ جلوس نکالنے سے کچھ حاصل نہيں ہوگا، وزيراعظم نے بتا ديا ہے او آئی سی کو کيا کرنا چاہئے۔

ان کا کہنا ہے کہ ہميں اس پليٹ فارم پر امت کو يکجا کرنے کی ضرورت ہے، 57 ممالک مل کر آواز اُٹھائيں گے تو آپ کی آواز پر نوٹس ليا جائے گا۔

متعلقہ خبریں