نگورنوکاراباخ کے شہر شوشا میں ترقیاتی کاموں کا آغاز

فوٹو: ٹوئٹر

آذربائیجان کا حال ہی میں آرمینیا سے جنگ میں آزاد کرائے گئے مقبوضہ علاقے نگورنوکاراباخ کے شہر شوشا میں ترقیاتی کاموں کا آغاز کردیا گیا۔

گزشتہ دنوں تک صدر رجب طیب اردوان نے آذربائیجان کے دارالحکومت باکو سمیت فتح کیے گئے علاقے نگورنوکاراباخ کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔ اس موقع پر آذربائیجان کے صدر الہام علیوف ان کے ہمراہ تھے۔

Armenia fumes as leaders of Turkey and Azerbaijan visit retaken Nagorno-Karabakh city | Euronews

ترک نیوز ایجنسی کے مطابق شوشا پہنچنے پر آذربائیجان کی فوج کے ایک چاق وچوبند دستے نے صدر طیب اردوان کو گارڈ آف پیش کیا۔ دونوں ممالک میں ایک معاہدے پر بھی دستخط کیے گئے ،جسے شوشا معاہدے کا نام دیا گیا ہے۔

آرمینیاکی شکست، ویزاعظم سےاستعفیٰ کامطالبہ

ترک صدر اردوان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ دنوں ممالک کے درمیان معاہدے سے تعلقات میں نئے دور کا آغاز ہوگا،44 روز کی جنگ کے بعد کاراباخ اپنے حقیقی وطن سے جا ملا جس پر میں ایک بار پھر آذری عوام کو مبارک باد پیش کرتا ہوں۔

واضح رہے کہ آذربائیجان کے علاقے شوشا میں آرمینیا نے 1992 میں قبضہ کرلیا تھا اور مسلمانوں کو بے دخل کردیا تھا۔ یہ علاقہ عالمی سطح پر آذربائیجان کی ملکیت تسلیم کیا جاتا ہے تاہم یہ آرمینیائی نسل کے لوگوں کے کنٹرول میں تھا۔

آرمینیا نےمکمل جنگ بندی معاہدے پر دستخط کردیے

گزشتہ سال آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان 41روزہ جنگ میں اس علاقے کو آزاد کرایا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں