وفاقی تعلیمی اداروں کوبھی پنجاب کےساتھ گرمیوں کی چھٹیاں دینےکی سفارش

Punjab schools

فوٹو: آن لائن

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی نے وفاقی تعلیمی اداروں کو بھی پنجاب کے ساتھ گرمیوں کی چھٹیاں دینے کی سفارش کردی ہے۔

سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے تعلیم کا چیئرمین عرفان صدیقی کی زیر صدارت اجلاس ہوا۔کمیٹی کے چئیرمین نے سیکریٹری تعلیم سے سوال کیا کہ پنجاب میں یکم جولائی سے چھٹیاں ہورہی ہیں تو وفاق میں 18 جولائی سے چھٹیاں کیوں کی جارہی ہیں۔گرمی کی شدت بڑھنے سے  بجلی بند ہوگی اوراس سے معاملات خراب ہوں گے۔

سیکرٹری تعلیم نے کہا کہ بچوں کا تعلیمی نقصان ہوا ہے اوربچوں کو متبادل دنوں میں اسکول بلایا جا رہا ہے۔جہاں بجلی جائے گی وہاں چھٹی کے احکامات دے رکھے ہیں۔

عرفان صدیقی نے کہا کہ 16 دن تک متبادل دنوں پر ایک بچہ صرف 6 دن سکول آئے گا،لاہور اور اسلام آباد کے درجہ حرارت میں صرف 1 ڈگری کا فرق ہے۔ سیکرٹری تعلیم نے یقین دلایا کہ اس اس معاملے کا جائزہ لیا جائے گا۔

اجلاس میں وزارت تعلیم کے ماتحت اداروں کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے چئیرمین کمیٹی نے کہا کہ کیا پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو وزارت تعلیم دیکھ رہی ہے؟ دکانیں کھول رکھی ہیں۔ نجی تعلیمی اداروں کی فیسوں پر کیا کنٹرول ہے؟۔

اس پر ایڈیشنل سیکرٹری وزارت تعلیم محی الدین وانی نے بتایا کہ وفاق کے نجی تعلیمی اداروں فیسوں کا تعین پیرا کرتا ہے، کرونا وباء کے دوران فیسوں میں 20 فیصد کمی کی گئی۔

متعلقہ خبریں

وفاقی تعلیمی اداروں کوبھی پنجاب کےساتھ گرمیوں کی چھٹیاں دینےکی سفارش،اسکولوں میں تعطیلات،موسم گرما کی تعطیلات