ویڈیو:قومی اسمبلی میں ن لیگ اورپی ٹی آئی رہنماؤں میں ہاتھاپائی

اسپیکر اراکین کو نشتوں پر بیٹھانے میں ناکام رہے

قومی اسمبلی میں اراکین کے ہنگامے اور شور شرابے کے باعث شہباز شریف کو دوسرے روز بھی تقریر کا موقع نہ مل سکا۔ حکومتی اور اپوزیشن اراکین ایک دوسرے پر کتابچے پھینکتے رہے۔

قومی اسمبلی میں منگل 15 جون کو اپوزیشن رہنما شہباز شریف کی تقریر کے دوران پی ٹی آئی رہنماؤں نے ان کے گرد گھیرا ڈال لیا۔ منہ پر کتاب لگنے سے پی ٹی آئی رہنما ملیکہ بخاری زخمی ہوگئیں۔

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے ارکان کو اپوزیشن لیڈر کے دوران اپنی اپنی سیٹوں پر بیٹھنےکی بار بار تلقین کرتے رہے مگر اراکین نے ایک نہ سنی۔ شہباز شریف کی تقریر کے دوران حکومتی نشستوں سے مسلسل ٹی ٹی کے نعرے لگائے جاتے رہے۔

حکومتی ارکان کے شور شرابے کے دوران وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور وزیر اطلاعات فواد چوہدری بھی اپنی نشستوں پر کھڑے ہوگئے۔

ن لیگی ارکان نے ایک جانب شہباز شریف کے گرد حصار بنائے رکھا اور دوسرے طرف حکومتی ارکان کے احتجاج کی ویڈیو بناتے رہے۔ جس پر اسپیکر قومی اسمبلی نے معزز ایوان میں موبائل فون کے استعمال پر پابندی لگا دی۔

اس دوران پی ٹی آئی رہنما علی انواز اعوان نے بجٹ دستاویزات ن لیگی سینیر رہنما روحیل اصغر کو دے ماری۔ روحیل اصغر نے جواباً وہ دستاویزات انہیں واپس ماری۔ اس دوران پی ٹی آئی علی نواز مخالفین کیلئے خراب زبان کا بھی مسلسل استعمال کرتے رہے۔

حکومتی اور اپوزیشن اراکین کے درمیان شور شرابے اور بد تمیزی کے باعث معزز ایوان کی کارروائی کو 20 منٹ کیلئے روکنا پڑا۔ حالات زیادہ خراب ہونے پر سینیٹ سیکریٹریٹ نے اضافی سارجنٹ اینٹ آرمز کی خدمات قومی اسمبلی کے سپرد کردیں۔

متعلقہ خبریں