’ویکسین نہیں لگوائی‘، زرد ستارے والی شرٹ پر امریکہ میں احتجاج

اتوار 30 مئی 2021 10:20

صارفین نے دکان کے خلاف احتجاج ریکارڈ کرتے ہوئے ’نفرت کا کام‘ ہیش ٹیگ استعمال کیا۔ فائل فوٹو: اے ایف پی

امریکی ریاست ٹینیسی میں کورونا ویکسین کے بارے میں مہم چلانے والی ایک دکان کو لینے کے دینے پڑ گئے ہیں۔
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق ٹینیسی کے شہر نیشولے میں ایک ہَیٹ شاپ یا ٹوپیوں کی دکان نے زرد ستارے والے نشان کی شرٹ متعارف کراتے ہوئے لکھا کہ ’ویکسین نہیں لگوائی‘۔ اس نشان کو اس علامت جیسا قرار دیا گیا جو نازی جرمنی میں یہودیوں کے لیے پہننا لازمی تھا۔
ویکسین کے بارے میں ثقافتی جنگ کے حوالے سے یہ امریکہ میں تازہ ترین واقعہ ہے جہاں دنیا میں کورونا سے سب سے زیادہ اموات ہوئیں۔
مزید پڑھیں
ہَیٹ بنانے والی امریکہ کی بڑی کمپنی سٹیٹسن نے سنیچر کو اعلان کیا ہے کہ وہ نیشولے کی دکان ’ہیٹ ڈبلیو آر کے ایس‘ کے ساتھ مزید کاروبار نہیں کرے گی۔
جمعے کو دکان کی جانب سے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ایک تصویر شیئر کی گئی جس میں کاروبار کی مالک خاتون نے سیاہ رنگ کی ٹی شرٹ پہن رکھی تھی جس پر زرد رنگ میں ستارہ داؤد بنا ہوا تھا۔ اس کے ساتھ پیغام درج تھا کہ ’ویکسین نہیں لگوائی‘۔
اس تصویر پر سوشل میڈیا صارفین نے سخت ردعمل کا اظہار کیا اور احتجاج کے بعد ’ہیٹ ڈبلیو آر کے ایس‘ نے تصویر اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ سے ڈیلیٹ کر دی۔
ایک سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ ’آپ کے نازی سٹار بیجز انتہائی مشتعل کرنے والے ہیں اور یہ میری زندگی میں دیکھے گئے سب سے زیادہ اینٹی سیمیٹک ہیں۔‘
فیس بک اور انسٹاگرام پر صارفین نے دکان کے خلاف احتجاج ریکارڈ کرتے ہوئے ’نفرت کا کام‘ ہیش ٹیگ استعمال کیا۔

دنیا کے کئی ملکوں میں کورونا ویکسین کے حوالے سے ایک طبقہ خدشات و تحفظات کا اظہار کرتا ہے۔ فائل فوٹو: روئٹرز
مقامی میڈیا کے مطابق چند درجن افراد نے نیشولے میں دکان کے باہر احتجاج بھی کیا جنہوں نے بینرز اٹھا رکھے تھے۔ ‏مظاہرین نے بینرز پر ’نیشولے میں نازی نامنظور‘ کے نعرے درج کر رکھے تھے۔
ادھر مغربی طرز کی ٹوپیاں یا ہیٹ بنانے والے مشہور برانڈ سٹیٹسن نے کہا ہے کہ اشتعال انگیز مواد اور رائے کے نتیجے میں کمپنی اور ڈسٹری بیوٹرز نے نیشولے کی دکان کو اپنی پراڈکٹس بیچنا بند کر دی ہیں۔
دکان کی جانب سے کورونا وائرس کی وجہ سے لگائی گئی پابندیوں کے خلاف کافی عرصے سے مہم چلائی جا رہی ہے اور اس حوالے سے صدر جو بائیڈن کو بھی نشانہ بنایا جاتا ہے۔
ستارہ داؤد والی شرٹ کے حوالے سے یہ تنازع اس وقت سامنے آیا ہے جب رواں ہفتے ری پبلکن پارٹی کے کانگریسمین مارجوری ٹیلر نے کورونا کے ماسک کو نازیوں کی جانب سے یہودیوں کو زبردستی لگائے گئے زرد ستارے کے مساوی قرار دیا۔