پاکستانی طلباءکی فلم نےانٹرنیشنل فیسٹول میں 3بڑےایوارڈزجیت لیے

پاکستانی نوجوانوں کی انتہائی کم بجٹ سے بنائی جانے والی فلم شارٹ فلم ” دریا کے اس پار ” نے نیو یارک سٹی انٹرنیشنل فلم فیسٹول میں بڑے ایوارڈز جیت لیے۔

مختصر دورانیے کی یہ فلم لاہور انجنیئرنگ یونیورسٹی کے سابق طلباء نے بنائی تھی جس کا ٹریلر جنوری 2021 میں جاری کیا گیا تھا۔

ڈائریکٹر شعیب سلطان نے کامیابی کے بعد اپنی ٹویٹ میں لکھا “پاکستان کے لئے فخر کا لمحہ”۔ 30 منٹ دورانیے کی یہ فلم شعیب کی پہلی کاوش ہے جس میں دماغی صحت سے متعلق مسائل اوراس حوالے سے معاشرے کےغیر سنجیدہ رویے، دقیانوسی تصورات دکھائے گئے ہیں۔

یہ پاکستان کے شمالی علاقہ جات سے تعلق رکھنے والی گل زرین نامی نوجوان لڑکی کی کہانی ہے ، جوبہت سی وجوہات کی بناء پر افسردگی کا شکار ہے ، اس میں یہ بھی شامل ہے کہ وہ ایک سرد ، ویران پہاڑی علاقے میں رہتی ہے۔ طالبعلمی کےدور سےہی اسے معاشرتی دباؤ کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور جب اسکی شادی ہوتی ہے تو اس کے اثرات بدتر ہوتے جاتے ہیں کیونکہ کوئی بھی اس کے خیالات اور احساسات کو نہیں سمجھتا۔ ایک صبح اس دباؤ کو مزید برداشت نہ کرسکنے والی ندی میں کود کرجان دے دیتی ہے۔

فلم کو متعدد عالمی فیسٹیولز میں بھجوایا گیٓا جہاں نیویارک سٹی کے سالانہ انٹرنیشل فیسٹیول میں 15 میں سے 6 نامزدگیاں ملنے کے بعد فلم 3 ایوارڈز جیتنے میں کامیاب رہی۔ ایوارڈز کی آفیشل ویب سائٹ کے مطابق ” دریا کے اس پار ” نے بہترین ڈائریکٹر، بہترین مرکزی اداکارہ اور بہترین آئیڈیا کا ایوارڈ جیتا۔

فلم کی کاسٹ میں اداکارہ سمیعہ ممتاز بھی شامل ہیں۔

اپریل کے وسط سے 5 مئی تک جاری رہنے والے اس فیسٹول میں دنیا کے 96 ممالک کی 15 سے 40 منٹ دورانیے کی ایکشن، ہارر، آرٹ اور ڈراما فلمیں پیش کی گئیں۔

اس سے قبل بھی پاکستان کی کئی فلمیں اور ڈاکیومینٹریز انٹرنیشنل ایوارڈ کیلئے نامزد کی جاچکی ہیں۔

سرمد کھوسٹ کی فلم ”زندگی تماشا” بوسن انٹرنیشنل فلم فیسٹیول ایوارڈ اور دی کم جی سیوک ایوارڈجیت چکی ہے۔

اداکارعثمان مختار کی فلم ” بینچ” لاس اینجلس میں انڈپینڈنٹ شارٹ ایوارڈز کیلئے نامزد ہوئی جبکہ اسے کانز انٹرنیشنل فلم فیسٹول میں بھی دکھایا گیا۔

پاکستان میں فتویٰ کلچر کے گرد گھومنے والی عرفات مظہرکی فلم ” سوائپ” پاکستان کی پہلی انیمیٹڈ فلم تھی جو انیکی فلم فیسٹول 2021 میں دکھائی گئی۔

اس کے علاوہ سکینہ سموں کی فلم ”انتظار” کا پریمیئر نیویارک کے ہارلم انٹنیشنل فدلم فیسٹول میں ہوا تھا۔

متعلقہ خبریں