پاکستانی معاشرےکو فلموں کےذریعے بدنام کیاجارہا ہے، ڈی رینجرزسندھ

ہم اتنےبرے نہیں جتنا مغربی میڈیا بناتا ہے

ڈی جی رينجرز سندھ ميجر جنرل افتخار حسن چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستانی معاشرے کو فلموں کےذریعے بدنام کیا جارہا ہے۔

ڈی جی رینجرز سندھ کراچی میں منشيات کے خلاف عالمی دن کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا معاشرہ اتنا برا نہیں جتنا دیکھایا جاتا ہے، مغرب میں تيزاب پھينکنے کے 800 کيسز ہوئے رپورٹ ہوئے لیکن میڈیا میں کہیں نہیں چلایا گیا، یہاں تین واقعات پر فلم بنائی اور شرمین عبید چنائی کو آسکر بھی مل گیا۔

انہوں نے کا کہا کہ کینیڈا میں مسلمان خاندان کےساتھ جو کچھ ہوا وہ کراچی جیسے شہر میں ہوتا تو مغربی میڈیا میں شور مچ جاتا کراچی کو خطرناک ترین شہر قرار دیا جاچکا ہوتا لیکن کینیڈا کے واقعے پر میڈیا خاموش تماشائی بنارہا۔

ڈی جی رینجرز سندھ نے مزید کہا کہ نيويارک، برطانيہ ميں جرائم واقعات سے کراچی کا موازنہ کرتے ہوئے کہا کہ ’ہم اتنے برے نہيں، جتنا ہمیں بنايا جاتا ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ ایک سال میں نیویارک میں ایک ہزار 638 سے ایک ہزار 688 ڈکیتیوں کی واردات ہوئیں، برطانیہ میں چاقو مارنے کے 10 ہزار کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ اس کےمقابلے شہرِ کراچی ميں 280 ڈکيتياں ہوئی ہیں۔

متعلقہ خبریں

ڈی رینجرز سندھ، ميجر جنرل افتخار حسن چوہدری، کراچی،