پاکستان میں موجود لیگی قیادت نوازشریف کیساتھ نہیں، وزیراطلاعات

شہبازشریف بھی بھائی کی طرح باہرجاکر واپس نہیں آئینگے، فوادچوہدری

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بڑا دعویٰ کرديا، کہتے ہیں کہ پاکستان میں موجود ن لیگ کی لیڈر شپ نواز شریف کے ساتھ نہیں، یہ سب باہر جانا چاہتے ہیں، ان کی کوئی سیاست نہیں، شہباز شریف بھی بڑے بھائی کی طرح جائیں گے اور پھر واپس نہیں آئیں گے۔

سماء کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں وفاقی وزیر داخلہ فواد چوہدری نے شریف خاندان اور مسلم لیگ ن پر کڑی تنقید کی۔ ان کا کہنا تھا کہ میاں صاحب کو باہر بھیجنا زیادتی تھی، شہباز شریف بھی بڑے بھائی کی طرح جائیں گے اور پھر واپس نہیں آئیں گے، یہ لوگ باہر جانا چاہتے ہیں، ان کی کوئی سیاست نہیں، نواز شریف کو باہر بھیجنا بڑی زیادتی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ شہباز شریف کو معلوم تھا حدیبیہ کا کیس کھلنے والا ہے، پاکستان میں احتساب کے فریم ورک کو بڑا جھٹکا پہنچا ہے، حدیبیہ میں اختیار کیا گیا طریقہ دیگر کیسز میں بھی اپنایا گیا، حدیبیہ کیس میں ثبوت موجود ہيں، عدالتوں کے سامنے رکھ سکتے ہیں، ایک ارب 24 کروڑ بڑی رقم تھی، حوالہ ڈیلرز نیستا خان اور خیستا خان کے ذریعے بیرون مل بھجوائے گئے، پیسہ جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے شریف فیملی کے 48 لوگوں کے نام پر واپس آیا۔

فواد چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ رقوم کی منتقلی کیلئے پاپڑ والے اور دوسروں کے جعلی اکاؤنٹس استعمال کئے گئے، ن ليگ کے ورکر اپنی لیڈر شپ سے سوال پوچھیں، ن لیگ کی مڈل لیڈر شپ اور ورکر یہاں دھکے کھارہے ہیں، نواز شریف نے ہمیشہ فوج کو نیچا دکھانے کی بات کی ہے، یہ لڑائی صرف عمران خان کی نہیں پورے پاکستان کی ہے، اداروں کو بھی اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

وفاقی وزیر کہتے ہیں کہ فوج کے ساتھ تمام جماعتوں کی صلح ہونی چاہئے، یہ پہلے سپہ سالار نہیں جن سے نواز شریف کی لڑائی ہوئی ہو، نواز شریف کی ماضی میں ہر کسی سے لڑائی رہی۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ پاکستان میں موجود لیڈر شپ نواز شریف کے ساتھ نہیں، سعد رفیق، رانا تنویر اور ایاز صادق نظر نہیں آئیں گے، زبیر عمر، مصدق ملک اور مریم اورنگزیب ٹی وی کے سیاستدان ہیں۔

متعلقہ خبریں