پاکستان کا مختلف ممالک کی پروازوں میں40 فیصد اضافے کا فیصلہ

فائل فوٹو

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے برطانیہ، کینیڈا، یورپ، چین اور ملائیشیا سے براہ راست پروازوں میں 40 فیصد اضافے کا فیصلہ کیا ہے۔ این سی او سی کی جانب سے بین الاقوامی ہوائی سفر کی پالیسی پر نظرثانی کردی گئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کا اجلاس 26 جون بروز ہفتے کو ہوا۔ اجلاس میں ملک بھر میں کرونا وائرس سے متعلق کیسز اور نافذ العمل ایس او پیز پر غور کیا گیا۔

اس موقع پر این سی او سی کی جانب سے دنیا کے مختلف خطوں میں کرونا کی صورت حال میں مجموعی بہتری اور ملک میں وبا کی صورت حال کے پیش نظر بین الاقوامی پروازوں کو مرحلہ وار معمول پر لانے کا فیصلہ کیا گیا۔

این سی او سی نے پاکستان آنے والے کرونا منفی مسافروں کیلئے گھروں میں قرنطینہ کی شرط ختم کر دی ہے۔ این سی او سی کے مراسلے کے مطابق پاکستان آنے والے کرونا مثبت مسافروں کیلئے گھروں میں قرنطینہ لازمی ہوگا۔ برطانیہ، کینیڈا، یورپ، چین، ملائیشیا سے براہ راست پروازوں میں 40فیصد اضافے کا بھی فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

این سی او سی کے مطابق بیرون ملک سے آنے والوں کے لیے کرونا ٹیسٹنگ کا عمل جاری رہے گا۔ مراسلے کے مطابق مذکورہ فیصلوں کا اطلاق یکم جولائی سے ہوگا۔

دوسری جانب متحدہ عرب امارات نے پاکستان اور بھارت سمیت چودہ ممالک سے آنے والی پروزاوں پر پابندی میں 21 جولائی تک توسیع کردی ہے۔ گلف نیوز کے مطابق کارگو، بزنس اور چارٹر پروازوں پر پابندی کا اطلاق نہیں ہوگا۔ پابندی والے ممالک میں، بنگلہ دیش، سری لنکا، جنوبی افریقا اور نیپال بھی شامل ہیں۔

کرونا وبا کے باعث 12 مئی کو پاکستان سے عرب امارات کی پروازوں پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ اس سے قبل 6 جولائی تک پابندی جاری رکھنے کا کہا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں