پاکستان کوگرے لسٹ میں رکھنے کاجواز نہیں رہا، شاہ محمودقریشی

ستائس میں سے 26 شرائط پوری کرچکے، وزیر خارجہ

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان فيٹف (ایف اے ٹی ایف) کی 27 ميں سے 26 شرائط پوری کرچکا اور 27ویں پر خاطر خواہ کام ہوگيا ہے، اس لئے پاکستان کو اب گرے لسٹ ميں رکھنے کا جواز نہيں رہا۔

وزير خارجہ شاہ محمود قريشی نے سماء سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فيٹف) کا فورم ٹيکنيکل ہے مگر پاکستان کیخلاف سیاسی مفادات کیلئے استعمال کيا جاسکتا ہے، بھارت اس کی بھرپورکوشش کررہا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان فيٹف کی 27 ميں سے 26 شرائط پوری کرچکا جبکہ 27 ويں شرط پر بھی خاطر خواہ کام ہوچکا ہے، ایسی صورتحال میں پاکستان کو گرے لسٹ ميں رکھنے کا جواز نہيں رہا۔

پاکستان 2018ء سے ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں موجود ہے، فروری 2021ء میں جون 2021ء تک مزید پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

فیٹف نے پاکستان کو منی لانڈرنگ، غیر قانونی طور پر رقوم کی منتقلی اور دیگر مالی بدانتظامیوں پر قابو پانے کا ٹاسک دیا تھا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارت فیٹف کو سیاسی مفادات کیلئے استعمال کررہا ہے، اسے ایسا نہیں کرنا چاہئے۔ واضح رہے کہ پاکستان کو بلیک لسٹ کروانے کیلئے بھارت مسلسل لابنگ کرتا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے رقوم کی غیرقانونی منتقلی اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام کیلئے ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔

مزید جانیے: پاکستان نے فیٹف کی 31سفارشات پر کمپلینٹ ریٹنگ حاصل کرلی

وزارت خزانہ کے حکام کے مطابق بھی پاکستان فیٹف کے 27 میں سے 26 نکات پرعمل کرچکا ہے، ایف اے ٹی ایف کے 21 سے 25 جون تک ہونیوالے اجلاس میں ریویو گروپ اپنی رپورٹ فیٹف اجلاس میں پیش کرے گا، جس کے بعد پاکستان کی قسمت کا فیصلہ ہوگا۔

تقریباً تین ہفتے قبل وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے اپنے ٹویٹر پیغام میں بتایا تھا کہ پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کی 31سفارشات پر کمپلینٹ ریٹنگ حاصل کرلی، ایف اے ٹی ایف کی تاریخ میں کسی بھی ملک کی جانب سے صرف 2 سال میں 20 معیارات میں بہتری بے مثال ہے۔

متعلقہ خبریں