پنجاب: شوگر فیکٹریز ایکٹ کے ترامیمی مسودہ قانون کی منظوری

Sugar canes on tractor

فوٹو: آن لائن

 گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے شوگر فیکٹریز ایکٹ کے ترامیمی مسودہ قانون کی منظوری دے دی۔

شوگر فیکٹریز ترامیمی ایکٹ پنجاب 1950 میں کاشت کاروں کی سہولتوں کے لیے اہم تبدیلیاں کی گئیں۔ نئے ایکٹ 2021 میں کسانوں کو ادائیگی کے لیے نئی شق شامل ہے۔

ترامیمی ایکٹ کے مطابق شوگر ملز اب کاشت کاروں کو بينکوں کے ذریعے ادائیگی کرنے کی پابند ہوں گی جبکہ شوگر ملز حکومت کی مقررہ تاریخ پر ہی گنے کی کرشنگ کر سکیں گی۔

مقررہ وقت پر گنے کے کاشت کاروں کو ادائیگی نہ کرنے والے شوگر ملز کے خلاف ایکشن بھی لیا جائے گا جبکہ نئے ایکٹ کے تحت گنے کے کاشت کاروں کو ادائیگی نہ کرنے والی شوگر ملز سے کین کمشنر ریکوری کروائیں گے۔

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کا کہنا تھا کہ شوگر ملز کو پابند کر دیا ہے وہ 45 دن کے اندر کاشت کاروں کو مکمل ادائیگی کریں گی۔ گنے کے کاشت کاروں کو شوگر ملز سے پیسے لینے کے لیے اب دھکے نہیں کھانے پڑیں گے۔