پنجاب میں8ویں جماعت کے بورڈ امتحانات ختم کرنیکا فیصلہ

فائل فوٹو

پنجاب کے وزیر تعلیم مراد راس نے کہا ہے کہ 5 ویں جماعت کے بورڈ امتحانات ختم کرنے کے بعد اب ہم 8 ویں جماعت کا بورڈ امتحان بھی ختم کر رہے ہیں۔

پنجاب اسمبلی میں صوبے کی تعلیمی صورت حال پر بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ ہم نے تعلیم گھر کھولا ہے،جہاں ایک لاکھ بیس ہزار ٹیچرز رجسٹرڈ کیے گئے ہیں۔ 1200 پہلے اسکول اپ گریڈیشن کیے، سات ہزار مزید اسکولوں کو اپ گریڈ کرنے جا رہے ہیں۔ اس کے علاوہ ایلمنٹری اسکولز میں شام کے اوقات میں کلاسز کا جلد آغاز ہوگا۔

مراد راس کا یہ بھی کہنا تھا کہ اپوزیشن کے دور میں اسکول ایجوکیشن میں ویڈیو کال کا نظام نہیں تھا۔ ایک ٹیچرز کے ٹرانسفر کیلئے ڈیڑھ لاکھ تک رشوت لی جاتی تھی۔ ای ٹرانسفر کے ذریعے ہم نے ٹیچرز کے ٹرانسفر کو آسان بنایا ہے۔

صوبائی وزیر تعلیم کے مطابق بغیر کوئی رقم خرچ کئے ہم نے ای ٹرانسفر ایپ تیار کی، آج ٹیچر گھر بیٹھ کر اپنے ٹرانسفر، ریٹائرمنٹ اور اے سی آر کیلئے آن لائن اپلائی کر سکتا ہے۔ اپوزیشن کی کارکردگی دیکھی جائے تو انہوں نے گزشتہ 10 سالوں میں کوئی کام نہیں کیا تھا۔ دو ہزار اسکولز میں کلاس روم بنائے، 400 سو ای لائبرییز ہم نے بنائیں۔ پانچ سال بعد جب ہم چھوڑ کر جائیں گئے سارا سسٹم موبائل فونز پر ہوگا۔

ایک موقع پر مخالفین پر تنقید کرتے ہوئے مراد راس نے کہا کہ پڑھا لکھا پنجاب کا نعرہ لگایا لیکن ان پڑھ پنجاب چھوڑ کر گئے۔ گزشتہ حکومت نے تعلیم میں تباہی پھیری۔ مسلم لیگ (ن) والے چاہتے ہیں کہ صوبے کی عوام کو جاہل رکھا جائے، یہ آگے نہ بڑھیں اور انہیں ووٹ ڈالتے رہیں۔ یہ سمجھتے تھے کہ اگر علم آگیا تو پھر ن لیگ کو ووٹ کون دے گا؟۔

متعلقہ خبریں