چولستان: جہاں98 فیصد لوگ اَن پڑھ ہیں

چولستان میں 98 فیصد آبادی تعلیم سے بےبہرہ ہے

پاکستان کے صوبہ سندھ کا ضلع چولستان میں تقريباً 10لاکھ کے قریب آبادی 98 فيصد لوگ پڑھے لکھے نہيں ہیں۔

چولستان میں آج سے پہلے يہاں کوئی پکا اسکول نہيں تھا، ٹوبہ عظيم والا ميں يہاں کے لوگوں نے پائی پائی جوڑی اور ريت کے سمندر ميں علم کی شمع جلائی۔

یہاں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ ہماری زندگی تو نقل مکانی ميں ہی گزر جاتی ہے، ہم تو پڑھے لکھے نہيں، مگر ہمارے بچے پڑھيں اس ليے يہ کيا يہ اچھا ہے۔

چولستان کے تالاب میں پانی کا ذخيرہ ختم ہوجائے تو لوگ مال مويشی سميت ايک ٹوبے سے دوسرے اور دوسرے سے تيسرے ميں ہجرت کرتے جاتے ہيں یوں ان کی زندگی کا سفر تلاشِ آب ميں ہی گزرتا جاتا ہے۔

ايک سے دوسرے ٹوبے کا فاصلہ 5 سے20 کلوميٹر تک ہے۔ پورے چولستان ميں گیارہ سو ٹوبے ہيں، ايک ٹوبے ميں 80 سے100 کچے گھرہيں۔ ايک ٹوبے ميں پانی کا ذخيرہ تقريباً 30سے45 روز رہتا ہے۔ مگر ٹوبہ عظيم والا پر قدرت کا عظيم کرم ہے کہ اس ٹوبے اور اطراف کے ٹوبوں ميں پانی کا ذخيرہ رہتا ہے۔

متعلقہ خبریں