چین کا 21ٹن وزنی راکٹ سمندر برد ہوگیا

فوٹو: گلوبل ٹائمز

چین کا 21 ٹن وزنی راکٹ ‘لانگ مارچ’ خلا سے واپس زمین کی طرف آتے ہوئے بے قابو ہوکر مالدیپ کے جزائر میں گر کر سمندر بُرد ہوگیا۔

چین کے سرکاری میڈیا کے مطابق خلا سے تیزی سے زمین کی طرف آنے والے بے قابو راکٹ کا بڑا حصہ دوبارہ فضا میں داخل ہونے کے دوران گر کر تباہ ہوا۔ یہ راکٹ دو روز قبل مدار سے 27 ہزار 60 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے زمین کی جانب آرہا تھا۔

چینی ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر یہ بے قابو راکٹ فضا میں داخل ہوجاتا تو کسی آبادی پر گرنے کا قوی امکان تھا تاہم خوش قسمتی سے راکٹ فضا میں داخل نہیں ہوسکا اور چینی حکومت کے دعوے کے مطابق بحر ہند میں گر کر تباہ ہوا۔

دوسری جانب امریکا اور دیگر عالمی قوتوں نے اتنے وزنی راکٹ کے مدار سے گرنے سے بروقت آگاہ نہ کرنے پر چین پر کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے جبکہ چین نے امریکی مؤقف کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ راکٹ کے خلا سے گرنے سے فوری طور پر آگاہ کردیا تھا۔

چین میں سرکاری میڈیا نے پہلے ہی خبریں دینا شروع کردی تھیں کہ 21 ٹن وزنی بے قابو راکٹ زمین پر کسی سمندر میں گر جائے گا جس سے کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوگا۔

واضح رہے کہ 98 فٹ لمبے اور 16 فٹ چوڑے اس راکٹ کے ذریعے اپریل کے اختتام پر چین کے نئے خلائی سٹیشن کو مدار میں لے کر جانے کی تیاریاں کی گئی تھیں۔