ڈاکٹرعطاالرحمان نےپاکستان میں کروناکی نئی قسم کی موجودگی کاامکان ظاہرکردیا

تاہم ابھی تک اس کی تصدیق نہیں ہوئی

ڈاکٹر عطا الرحمان نے کہا ہے کہ پاکستان میں قوی امکان ہے کہ کرونا وائرس کا نیا ڈیلٹا ویرینٹ پہنچ چکا ہو تاہم ابھی تک اس کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔

سماء کے پروگرام نیا دن میں بات کرتےہوئے کرونا ٹاسک فورس کے سربراہ ڈاکٹر عطا الرحمان نے کہا کہ بہت ممکن ہے کہ یورپ سے کرونا کا نیا ڈیلٹا ویرینٹ پاکستان پہنچ چکا ہو۔ برطانیہ اور بھارت میں یہ ویرینٹ تیزی سے پھیل رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ کرونا وائرس کی خاصیت یہ ہے کہ سب سے زیادہ مہلک قسم جلدی چھاجاتی ہے تاہم ابھی تک پاکستان میں الفا ویرینٹ رہا۔

ڈاکٹرعطا الرحمان نے بتایا کہ کراچی یونیورسٹی میں کرونا وائرس کے ویرینٹ سے متعلق تحقیقات جاری ہیں۔ انھوں نے مزید بتایا کہ ڈیلٹا ویرینٹ کے علاوہ ڈیلٹا پلس ،ایپسلون ویرینٹ سمیت کئی دیگر ویرینٹ سامنے آئے ہیں۔

ڈاکٹر عطا الرحمان نے واضح کیا کہ ابھی ڈیلٹا اور ڈیلٹا پلس ویرینٹ خطرناک ثابت ہوئے ہیں۔ کرونا ویکسین ایک حد تک ان ویرینٹ سے بچاتی ہیں اور کوشش کی جارہی ہے کہ زیادہ بہتر ویکسین تیار کی جائے۔

انھوں نے بھی خدشہ ظاہر کیا کہ کرونا وائرس کی مزید لہر آسکتی ہے اور اس سے نبٹنا اہم ہوگا۔ حکومت روزانہ کی بنیاد پر کرونا کے پھیلاؤ کے عمل کی نگرانی کررہی ہے۔

متعلقہ خبریں