کالعدم تحریک لبیک پر پابندی برقرار رہیگی،فواد

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات نے اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے کالعدم ٹی ایل پی پر پابندی میرٹ پر لگائی تھی، تمام حقائق اور شواہد کی روشنی میں وفاق نے کالعد جماعت پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد منگل 13 جولائی کو پریس کانفرنس سے خطاب میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا تھا پنجاب حکومت کی جانب سے کالعدم جماعت کے خلاف جو کارروائی کی گئی وہ میرٹ پر کی گئی تھی۔ کالعدم جماعت کے کارکنوں نے پولیس اہل کاروں کو شہید کیا اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا۔

انہوں نے کہا کہ تمام شواہد اور ثبوت کی روشنی میں وفاقی کابینہ نے بھی کالعدم تحریک لبیک پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ہم نے اس جماعت کے انتخابی نشان سے متعلق بھی حکمت عملی ترتیب دی ہے۔ اس سلسلے میں باضابطہ الیکشن کمیشن آف پاکستان اور دیگر اداروں کے ذریعے کالعدم جماعت کا انتخابی نشان منسوخ کرائیں گے۔ کالعدم جماعت کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

افواج پاکستان کیلئے اسپیشل الاؤنس کا اعلان

دوسری جانب آج ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں افواج پاکستان کیلئے 15 فیصد اسپشل الاؤنس کی منظوری بھی دی گئی ہے۔ جب کہ ایف سی اور رینجرز کی تنخواہوں میں بھی افواج پاکستان کی طرح اس سال اضافے کی منطوری کا امکان ہے۔ وزیراعظم نے رینجرز اور ایف سی کی تنخواہوں میں اضافے کے احکامات جاری کیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ 2 سال سے افواج پاکستان کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں ہوا تھا۔ گزشتہ 2 سال کے دوران سول ملازمین کی تنخواہوں میں 25 فیصد اضافہ کیا گیا۔ سول ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کے سبب افواج کی تنخواہوں میں اضافہ نہ ہوسکا، تاہم سول اور افواج کا الاؤنس برابر کرنے کیلئے فوج کو 15 فیصد الاؤنس دیا جا رہا ہے۔

اضافی پروٹوکول واپس

اضافی پروٹوکول سے متعلق وزیر اطلاعات نے بتایا کہ آج اجلاس میں کابینہ کو اہم شخصیات کی سیکیورٹی اور ان کے زیر استعمال پروٹوکول کی رپورٹ پیش کی گئی ہے۔ وزیرِاعظم نے آئندہ کابینہ اجلاس میں سیکیورٹی اور پروٹوکول کو ریشنلائز کرنے کے حوالے سے جامع پلان پیش کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔ اپوزیشن اور سابق بیوروکریٹس کے پاس زیادہ سیکیورٹی ہے۔ سابق بیورو کریٹس سے سیکیورٹی واپس لی جا رہی ہے۔ سابق وزرائے اعظم، ججز اور وزرائے اعلیٰ سے بھی سیکیورٹی واپس لینے پر بات چیت ہوئی۔

متعلقہ خبریں