کراچی: اعجاز جکھرانی کو گرفتار نہ کرنے کا حکم

Aijaz Jakhrani

ٹو: اعجاز جاکھرانی/ فیس بک

سندھ ہائی کورٹ نے مشیر جیل خانہ جات اعجاز جکھرانی کو آئندہ سماعت تک گرفتار نہ کرنے کا حکم دے دیا۔

اعجاز جکھرانی کے خلاف نیب انکوائریز سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی۔

دوران سماعت اعجاز جکھرانی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ انکوئری میں کال اَپ نوٹس جاری نہیں کیا گیا اور نیب بدنتیی پر انکوئری کر رہا ہے۔

نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ اعجاز جکھرانی کے خلاف ایجوکیشن ورکس سروس میں انکوئری جاری ہے۔

دونوں طرف کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے آئندہ سماعت تک اعجاز جکھرانی کو گرفتار نہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 15 مارچ تک ملتوی کر دی۔

نیب مشیر جیل خانہ جات اعجاز جاکھرانی کے خلاف تین انکوائریز کر رہا ہے جبکہ ان کے خلاف سکھر میں ایک ریفرنس بھی دائر ہوچکا ہے۔ تین ماہ قبل نیب کورٹ سکھر نے فرد جرم بھی عائد کی تھی۔

مشیر جیل خانہ جات سندھ کے گھر اکتوبر 2019 میں چھاپے کے دوران مختلف فائلز تحویل میں لی گئی تھیں۔ اعجاز جکھرانی کے گھر چھاپہ انکے گرفتار کزن عباس جاکھرانی کی نشاندہی پر مارا گیا تھا۔

چھاپے کے دوران جیکب آباد کے بلدیاتی اداروں سے متعلق اہم ریکارڈ تحویل میں لیا گیا۔ نیب ٹیم نے اعجاز جاکھرانی کے اہل خانہ سے بھی پوچھ گچھ کی اور لاکرز سے متعلق سوالات کیے۔