کراچی میں بحریہ، پولیس اہلکاروں کے درمیان جھگڑا کیوں ہوا؟

سوشل میڈیا پر جھگڑےکی ویڈیو وائرل ہوئی

حب ریور روڈ پر پیر 24مئی کو کراچی پولیس اور پاک بحریہ کے اہلکاروں کے درمیان جھگڑے کا واقعہ پیش آیا۔

جھگڑے کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی جس میں دیکھا گیا کہ بحریہ اور پولیس اہلکار ایک دوسرے پر لاٹھی چارج کر رہے ہیں۔

دونوں محکموں کے اعلیٰ حکام کی جانب سے مداخلت کے بعد معاملہ حل ہوگیا لیکن اصل معاملہ جاننے کے لیے سماء ڈیجیٹل نے افسران سے گفتگو کی ہے۔

ایس ایس پی کیماڑی فدا حسین کے مطابق پولیس نے حب ریور روڈ پر ایک چیک پوائنٹ قائم کیا ہوا ہے تاکہ ساحل سمندر پر پکنک منانے والے شہریوں کو روکا جا سکے۔

ایس ایس پی کا کہنا تھا کہ “سندھ حکومت نے کرونا وائرس پر قابو پانے کے لیے ساحل سمندر سمیت تفریحی مقامات بند کیے ہوئے ہیں اور احکامات پر عمل درآمد کے لیے پولیس نے مختلف جگہوں پر چیک پوائنٹس بھی قائم کیے ہوئے ہیں”۔

حالیہ واقعے پر پولیس افسر کا کہنا تھا کہ ”پولیس اور نیوی اہلکاروں کے درمیان لڑائی غلط فہمی کی بنا پر ہوئی تاہم اعلیٰ حکام کی مداخلت کے بعد معاملہ حل کر لیا گیا ہے”۔

پاک بحریہ کے ترجمان نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ ایک نیوی افسر نتھیا گلی بیچ کے قریب اپنی رہائش گاہ کی طرف جا رہے تھے کہ راستے میں پولیس نے روک لیا۔

ترجمان کے مطابق نیوی افسر نے پولیس اہلکاروں کو بتایا کہ ہم پکنک منانے نہیں بلکہ اپنی رہائش گاہ کی طرف جا رہے ہیں لیکن پولیس نے انہیں جانے کی اجازت نہیں دی۔

ترجمان نے بتایا کہ اسی دوران نیوی اہلکار جائے وقوعہ پر پہنچے اور پولیس اہلکاروں کو سمجھانے کی کوشش کی لیکن سخت جملوں کے تبادلے کے بعد پولیس اور نیوی اہلکار آپس میں لڑ پڑے۔

ترجمان نے ایک اور ویڈیو کلپ بھی جاری کیا ہے جس میں دیکھا گیا کہ ایک شخص (جسے نیوی افسر کہا جا رہا ہے) کار کے اندر بیٹھا ہوا ہے جبکہ اس کے ساتھ ایک خاتون بھی بیٹھی ہوئی ہے۔ ویڈیو کار کی پچھلی سیٹ پر بیٹھے شخص نے بنائی تاہم مسافروں کی کل تعداد کا اندازہ نہیں لگایا جا سکا۔

ویڈیو میں دیکھا گیا کہ چیک پوائنٹ پر پولیس وین کار کے ساتھ کھڑی ہے۔ ابتداء میں پولیس اہلکار دروازے پر دستک دے کر نیوی افسر کو باہر آنے کا کہتا ہے۔ اسی دوران ایک پولیس اہلکار کار میں بیٹھے افراد کی ویڈیو بھی بناتا ہے۔

بحریہ کا افسر موقع سے بھاگنے کی کوشش کرتا ہے لیکن ایک پولیس اہلکار گاڑی کو روک لیتا ہے۔ ایک اور پولیس اہلکار غصے میں ڈرائیور کی طرف آکر دروازہ کھولنے کی کوشش کرتا ہے جبکہ دوسرا بحریہ کے افسر کو گاڑی سے نکالنے کی کوشش کرتا ہے لیکن اسے دوسرے پولیس اہلکار روک دیتے ہیں۔

اس کے بعد بحریہ کا افسر گاڑی کھڑی کرکے باہر نکل آتا ہے۔ ویڈیو میں دیکھا گیا ہے کہ وہ کسی سے فون پر بات کر رہا ہے۔ یہ افسر موقع پر بحریہ کے اہلکاروں کو کال کرتا نظر آتا ہے۔

ڈی آئی جی ساؤتھ اکبر ریاض نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ معاملہ بحریہ کے حکام کے پاس اٹھایا گیا ہے اور انہوں نے اس کی تحقیقات کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اسکے ساتھ ہم لڑائی کی وجہ معلوم کرنے اور ذمہ داروں کا تعین کرنے کے لیے بھی انکوائری کر رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں