کراچی میں 990ارب روپے کے ترقیاتی کام جاری ہیں، سعیدغنی

Saeed Ghani Pc khi 02-05

فائل فوٹو

وزیر سندھ تعلیم سعید غنی نے دعویٰ کیا ہے کہ کراچی میں 990ارب روپے کے ترقیاتی کام جاری ہيں جبکہ این آئی سی وی ڈی کے فنڈز اس کے علاوہ ہیں۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ سندھ حکومت کی کارکردگی وفاق اور ديگر صوبوں سے بہتر ہے۔ مانتے ہيں کہ ہم کراچی کو ٹرانسپورٹ نہیں دے سکے لیکن سندھ حکومت نے اسپتال، يونيورسٹيز اور کالجز بنائے۔

انہوں نے کہا کہ ہم سے پوچھیں ہم بتائیں گے کہ ہم نے کیا کام کیا ہے، ججز ہمارے لیے قابل احترام ہیں لیکن اس طرح کی آبزرویشن نہ دیں۔ الہ دین پارک میں ہزاروں لوگوں کا کاروبار ہے اور اتنی تیزی سے کاموں سے انسانی المیے جنم لیتے ہیں۔

سعید غنی نے کہا کہ صرف سندھ حکومت پر بوجھ ڈالا جاتا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ کراچی میں لوگوں کو غلط طريقے سے آباد کرایا گیا۔ ایم کیوایم نے کراچی میں پارکس اور گراؤنڈ پر قبضے کرائے۔

انہوں نے کہا کہ جب قبضے ہوگئے تو آج ان کو ہٹانا آسان کام نہیں اور حکومت کی ہمت نہیں کہ گراؤنڈ پر بنے گھروں سے لوگوں کو بے دخل کرے۔

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی سے متعلق سعید غنی نے کہا اندازہ ہوتا ہے کہ منصوبہ ساز ایک ہی ہے کیونکہ قومی اسمبلی اور سندھ اسمبلی میں ایک ہی وقت میں سیٹیاں بج رہی تھیں۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ بدتمیزی کرنے والوں کو اگلی نشست پر بٹھایا گیا ہوگا اور شبہ نہیں کہ یہ سب وزیراعظم کی ہدایت پر ہوا۔ بدتمیزی کرنے اور مار کٹائی کرنے والوں کو انکی پارٹی قیادت نے شاباش دی۔

سعید غنی نے تحريک انصاف کے عبدالعزیز کے پیپلزپارٹی ميں شامل ہونے کا اعلان بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ عام انتخابات ميں عبدالعزیز نے 34ہزار101 ووٹ حاصل کیے تھے اور وہ پی ٹی آئی کراچی ڈویژن کے سابق جنرل سیکریٹری بھی رہے ہیں۔

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ آئندہ الیکشن میں پیپلزپارٹی بڑی سیاسی جماعت کے طور پر سامنے آئے گی جس کے لیے ہم پیپلزپارٹی کو کراچی میں مزید مضبوط کریں گے۔ پیپلز پارٹی عوام کی خدمت میں مصروف ہے۔

متعلقہ خبریں