کروناوائرس: آکسیجن کی قمیت تین گنا اضافہ

ڈیلرز نےقیمتیں بڑھا دیں

کرونا وائرس کی عالمی کے باعث مریضوں کےلیے آکسیجن کی ضرورت پڑتی ہے تاہم ڈیلرز نے آکسیجن کی قمیت تین گناتک کا اضافہ کردیا۔

فیکٹری سے 13روپے فی لیٹر ملنے والی آکسیجن50روپے فی لیٹر بیچی جارہی ہے، صنعتکاروں کا کہنا ہے کہ کمپنیاں اور ڈپومنافع خوری میں ملوث نہیں، فیکٹری سےآکسیجن لانےمیں بہت خرچہ ہے جس کے باعث قیمتیں بڑھی ہیں۔

مریضوں پر 90فیصد آکسیجن استعمال ہورہی ہے، ڈاکٹر فیصل سلطان

فیکٹری مالکان اور ڈپو مینجرز کےمطابق ملک میں آکسیجن وافر مقدار میں موجود ہےاور اس کی قیمت میں قابل ذکر اضافہ نہیں ہوا۔

کروناوائرس: اگلے2ہفتے ہمارے لیےبہت اہم ہیں، وزیراعظم

چیف ایگزیکٹو گیس کمپنی عتیق الرحمان کا کہنا ہے کہ گیس کی قیمت بڑھی نہیں ہے، ڈيلر کی سطح پر قيمتيں  بڑھائی گئی ہيں جبکہ پاکستان ميں يوميہ 700ٹن گيس پيدا ہوتی ہے۔

ڈپو مینجر محمد دانش کا کہنا ہے کہ ہم 47 لیٹر کا سلنڈر 600روپے میں بھرکر دیتے ہیں جبکہ صرف کمپنیاں لاہور کے ہی ریجن میں 15ہزار کے قریب سلنڈرز فراہم کر رہی ہیں۔

متعلقہ خبریں