کرونا وائرس: فعال کیسز کی تعداد 59 ہزار 18 ہوگئی

پاکستان میں  گذشتہ 24 گھنٹے کے دوران 75 افراد کرونا وائرس کے باعث  انتقال کرگئے۔ ان میں سے 36 مریضوں کا انتقال وینٹیلیٹر پر ہوا۔

جمعرات کو این سی او سی نے بتایا ہے کہ 24  گھنٹوں میں 2 ہزار 726 نئے کرونا کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور ملک میں مثبت کرونا کیسز کی شرح 4.34 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

کرونا وائرس کے باعث سب سے زیادہ پنجاب اور سندھ میں 24، 24 اموات ریکارڈ کی گئیں۔ خیبرپختونخوا میں 19 اموات، بلوچستان میں 2، اسلام آباد اور آزاد کشمیر میں 3، 3 مریضوں کا وائرس کے باعث انتقال ہوا۔ ملک میں کرونا سے مجموعی اموات کی تعداد 20 ہزار 540 ہو گئی ہے۔

ٹیسٹ اور کیسز:۔

این سی او سی نےبتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 62 ہزار 706 ٹیسٹ کئے گئے۔ کرونا کے فعال کیسز کی تعداد 59 ہزار 18 ہوگئی ہے۔ وائرس سے صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 8 لاکھ 31 ہزار 744 ہوگئی ہے۔ ملک بھر میں مجموعی کیسز کی تعداد 9 لاکھ 11 ہزار 302 ہوگئی ہے۔

مریضوں کی تعداد:۔

این سی او سی کےمطابق اس وقت ملک کے 639 مختلف اسپتالوں میں 4 ہزار 496 مریض زیرِعلاج ہیں۔ پشاور میں 34 فیصد، ملتان میں 66 فیصد، لاہورمیں 42 فیصد، بہاولپورمیں 38 فیصد وینٹیلیٹرز بھرچکے ہیں۔

آکسیجن بیڈز سے متعلق بتایا گیا ہے کہ گوجرانوالہ میں 46 فیصد، بہاولپورمیں 37 فیصد،  ملتان میں 54 فیصد اور صوابی میں 50 فیصد آکسیجن بیڈز پر مریض موجود ہیں۔

ویکسینیشن:۔

این سی او سی نے بتایا ہے کہ ملک بھر میں کرونا ویکسینشن کا عمل جاری ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں ملک بھر میں 2 لاکھ 94 ہزار 364 افراد کو ڈوز لگائی گئی۔ اب تک 64 لاکھ 24 ہزار 873 افراد کی ویکسینیشن ہوچکی ہے۔

پاکستان میں کرونا ویکسینیشن کے لیے 19 سال سے زائد عمر کے افراد کی رجسٹریشن آج سے شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔این سی او سی کے سربراہ اسد عمر کے مطابق اس اقدام سے ملک بھر میں طبی ماہرین کی جانب سے ویکسینیشن کے لیے مقررہ آبادی کی رجسٹریشن ممکن ہوجائے گی۔

منگل کو سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے پارلیمانی سیکرٹری صحت ڈاکٹرنوشین حامد کا کہنا تھا کہ پاکستان میں چین کے اشتراک سے بننے والی کرونا ویکسین  کی ایک دو روز میں ڈریپ سے منظوری لی جائے گی،جس کے بعد ویکسین اگلے ہفتے لانچ کردی جائے گی۔ انھوں نے بتایا کہ مذکورہ ویکسین کی کوالٹی ٹیسٹنگ کا عمل مکمل ہوچکا ہے اوراس کو تمام مروجہ طریقہ کار سے گزارا جاچکا ہے۔

ڈاکٹر نوشین حامد نے بتایا کہ لانچنگ کے موقع پر ہی کچھ لوگوں کو وہ ویکسین لگائی جائے گی۔ یہ ویکسین بہت فائدہ مند ہے اور کرونا ہونے کی صورت میں بھی مریض کو زیادہ نقصان نہیں پہنچے گا۔

متعلقہ خبریں