کرونا وائرس: مثبت کرونا کیسز کی شرح 2.94 فیصد ہوگئی

فائل فوٹو

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے بتایا ہے کہ 1 دن میں 53 افراد کرونا وائرس کے باعث  انتقال کر گئے۔ان میں سے 18 مریضوں کا انتقال وینٹیلیٹر پر ہوا۔

منگل کو این سی او سی نے بتایا ہے کہ  24  گھنٹوں میں 1 ہزار 383 نئے کرونا کیسز رپورٹ ہوئے۔ ملک میں مثبت کرونا کیسز کی شرح 2.94 فیصد ہے۔کرونا کے باعث سب سے زیادہ پنجاب میں 35 اموات  اور سندھ میں 8 اموات ہوئیں۔ خیبرپختونخوا میں 6 اموات،اسلام آباد میں 1، بلوچستان میں 1 اور آزاد کشمیر میں 2 اموات ہوئیں۔کرونا سے مجموعی اموات کی تعداد 21 ہزار 323 ہوگئی ہے۔

این سی او سی نے مزید بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 46 ہزار 882 ٹیسٹ کئے گئے۔ ملک میں کرونا کے فعال کیسز کی تعداد46 ہزار 190 ہوگئی ہے۔ کرونا وائرس سے صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 8 لاکھ 67 ہزار 447 ہوگئی ہے۔ ملک بھر میں کرونا وائرس کے مجموعی کیسز کی تعداد 9 لاکھ 35 ہزار 13 ہوگئی ہے۔

اس وقت ملک کے 639 مختلف اسپتالوں میں 3 ہزار 446 مریض زیرعلاج ہیں۔پشاور میں 23 فیصد، ملتان میں 57 فیصد، لاہورمیں 29 فیصد،بہاولپورمیں 38 وینٹیلیٹرز بھر چکے ہیں۔ کراچی میں 32 فیصد، پشاور میں 29 فیصد، گوجرانوالہ میں 29 فیصد اور ایبٹ آباد میں 32 فیصد آکسیجن بیڈز پر مریض موجود ہیں۔

اس کے علاوہ کراچی میں کرونا وائرس کی بھارتی قسم کے مزيد 4 کيسز سامنے آگئے ہیں۔ ماہرین صحت نے اسے بچوں کیلئے خطرناک قرار دے دیا ہے۔ ماہرین صحت کے مطابق چاروں مسافر عراق سے پاکستان آئے ہیں اور ان میں بھارتی قسم کے کرونا وائرس کی تصديق ہوئی۔ 4 میں سے 2 مسافروں کی حالت تشويش ناک ہے۔ ڈاؤ میڈیکل کالج اینڈ یونیورسٹی کی کرونا لیب کے ہیڈ کا کہنا ہے کہ بھارتی قسم کا کرونا وائرس ہر عمر کے افراد کیلئے خطرناک ہے۔

سیکریٹری ہیلتھ سندھ قاسم سومرو نے بتایا ہے کہ سندھ میں روزانہ 2 لاکھ افراد کو ویکسین لگانے کا ہدف ہے جبکہ ایکسپو سینٹر میں ہر روز 30 ہزار افراد کو ویکسین لگانے کی کوشش کررہے ہیں۔ 2 سے 3 روز میں حاملہ خواتین کو فائزر ویکسین لگائیں گے۔ بیرون ملک جانے والے طلبہ بھی فائزر ویکسین لگواسکیں گے۔ اب تک 16 لاکھ افراد کو سندھ میں ویکسین لگ چکی ہے۔

متعلقہ خبریں