گردوں کی پیوندکاری اب ملتان میں بھی دستیاب

ملتان انسٹی ٹیوٹ آف کڈنی ڈیزیز کو اجازت مل گئی

ملتان کے شہریوں کو گردوں کی پیوندکاری کے لیے اب ملک کے دوسرے شہروں کا رخ کرنے کی ضرورت نہیں رہی کیوں کہ شہر کے گردوں کے اسپتال کو اس طریقہ علاج کی اجازت مل گئی ہے۔

پنجاب ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ اتھارٹی نے ملتان انسٹی ٹیوٹ آف کڈنی ڈیزیز کو گردوں کی پیوندکاری کی اجازت دے دی۔

یہ فیصلہ پنجاب ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ اتھارٹی نے گردوں کے بڑھتے مرض کے پيش نظر کیا جس کے باعث شہریوں کو اب ملتان میں بھی گردوں کی پیوندکاری کی سہولت حاصل ہوگی۔

کمشنر ملتان جاوید اختر محمود کا کہنا ہے کہ انسٹی ٹیوٹ آف کڈنی ڈیزیز میں بچوں اور بڑوں کے گردوں کی پیوند کاری مفت کی جائے گی جبکہ ایک سال ادویات کے اخراجات بھی ادارہ برداشت کرے گا۔ کڈنی ٹرانسپلانٹ سے لاکھوں مریضوں کو نئی زندگی ملے گی۔

ڈاکٹر نعمان ہاشمی کا کہنا ہے کہ گردے کی بیماریاں آبادی میں 10 سے 15فیصد ہیں، ہمارے ڈیٹا کے مطابق فائنل اسٹیج کے مریض 60 فیصد ہیں جن کے لیے سب سے بہتر گردے کا ٹرانسپلانٹ ہے۔

گردوں کے ایک مریض کا کہنا ہے کہ ملتان ایسی سہولت متعارف کرانا اچھی بات ہے پہلے علاج کے لیے شہر کے باہر جانا پڑتا تھا۔

متعلقہ خبریں