گوادر میں بجلی کا طویل بحران، شہر میں مکمل ہڑتال

وزیرتوانائی حماداظہر نے ایران سے تعطل کو وجہ قرار دیدیا

Your browser does not support the video tag.

گوادر ميں بجلی اور پانی بحران کیخلاف مکمل ہڑتال کی گئی۔ وزیر توانائی حماد اظہر کہتے ہیں کہ لوڈشیڈنگ کی وجہ ایران میں بجلی کا شارٹ فال ہے۔

ایران میں بجلی کے شارٹ فال نے بلوچستان والوں کو بھی بحران میں مبتلا کردیا، پڑوسی ملک سے درآمدی بجلی کی معطلی سے گوادر اندھيرے ميں ڈوب گيا۔

شہریوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوگیا، 3 روز سے احتجاج جاری ہے، آج (جمعرات کو) شہر میں مکمل ہڑتال رہی، اہم شاہراہوں کو رکاوٹیں کھڑی کرکے بلاک کردیا۔

بجلی کی بندش کیخلاف سربندن کراس پر دھرنے سے مکران کوسٹل ہائی وے بند ہوگيا۔ شہری کہتے ہيں گوادر، مکران اور تربت ریجن میں یومیہ 16 سے 18 گھنٹے بجلی بند رہتی ہے، حکومت مسئلے کو مستقل بنیادوں پر حل کرے۔

وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے ایران سے درآمدی بجلی میں تعطل کو بحران کی وجہ قرار دیا۔ اپنے ٹویٹر پیغام میں انہوں نے کہا کہ گوادر، مکران اور تربت ریجن نیشنل گرڈ سے منسلک نہیں، ان کا انحصار ایرانی بجلی پر ہے۔

یہ بھی کہا تینوں علاقوں کو نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے میں 2 سال کا عرصہ لگے گا۔

حماد اظہر نے پاکستان میں تعینات ایرانی سفیر کو ٹیلیفون کرکے بجلی کی جلد بحالی کا مطالبہ کیا، جنہوں نے معاملہ جلد حل کرانے کی یقین دہانی کرادی۔

واضح رہے کہ پاکستان ایران سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی درآمد کرتا ہے جو بلوچستان کے ساحلی علاقوں کو فراہم کی جاتی ہے۔

متعلقہ خبریں