گوادر میں سونامی کی اطلاع دینے والا سسٹم نصب

گوادر میں سونامی ارلی وارننگ سائرن سسٹم پی ایم ڈی آفس پسنی میں نصب کردیا گیا ہے۔

یو این ڈی پی اور پی ایم ڈی بلوچستان کے حکام نے پسنی میں سونامی سائرن سسٹم کی تنصیب کے بعد اس کا باقاعدہ افتتاح کردیا ہے۔

یو این ڈی پی حکام نے بتایا ہے کہ حکومت نے جاپان کی خصوصی گرانٹ سے یو این ڈی پی اور ہلال احمر پاکستان کے اشتراک سے پاکستان کے ساحلی علاقوں میں ابھی تک  5 ڈیجیٹل سائرن سسٹم ٹاور  نصب کیے ہیں۔ ان میں سے 2 مکران کے ساحلی علاقے گوادر اور پسنی میں نصب کیے گئے ہیں جبکہ 3 ٹاور سندھ کے ساحلی علاقوں میں نصب کیے گئے ہیں۔

اس سسٹم میں سونامی آنے سے 12سے 15منٹ پہلے سائرن بجے گا جو ڈیڑھ کلومیٹر دور تک سنائی دے گا۔ سائرن کی  گونج سنائی دینے سے لوگ محفوظ پناہ گاہ اور حفاظتی اقدامات کرسکتے ہیں۔

یواین ڈی پی حکام نےبتایا کہ  یہ ایک جدید سائرن سسٹم ہے جو سیٹلائیٹ سے منسلک ہے اور زلزلے کے بعد سمندر میں پیدا ہونے والی سونامی کی پیشگی اطلاع دے گا۔ ٹاور کی اونچائی 60فٹ ہے اور اس کی رینج ڈیڑھ کلو میٹر تک ہے۔

  یواین ڈی پی حکام نے بتایا کہ گوادر،پسنی ، ٹھٹہ، کراچی اور لسبیلہ سونامی کے خطرناک زون میں شامل  ہیں۔ جاپان کی خصوصی گرانٹ سے پسنی میں 4 ہزار اسکوائر فٹ کا ایک سونامی شیلٹر ہوم بھی تعمیر کیا جائے گا۔سونامی شیلٹر ہوم کے 2 حصے ہونگے جن میں ایک حصہ خواتین جبکہ دوسرا حصہ مردوں کے لیے مختص ہوگا۔سونامی شیلٹر ہوم میں واش روم، پانی، بجلی اور دوسری  سہولیات بھی فراہم کی جائیں گی۔

یو این ڈی پی حکام نےمزید بتایا کہ جاپان اور یواین ڈی پی کے اشتراک سے پسنی کے ایک اسکول کو  جدید طریقے سے استوار کیا جائے گا تاکہ سونامی کی صورتحال پیدا ہونے کے بعد بچے وہاں جاکر اپنی تعلیم جاری رکھ سکیں۔

متعلقہ خبریں