گورنرسندھ کی ایڈمنسٹریٹر کراچی کیلئے مرتضیٰ وہاب کے ممکنہ نام کی مخالفت

گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کراچی کے ایڈمنسٹریٹر کے لیے مرتضیٰ وہاب کے نام کی مخالفت کردی۔

جمعہ کی دوپہر گورنر سندھ عمران اسماعیل نے ڈی ایچ اے میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گورنر ہاؤس میں ایک اجلاس ہوا تھا جس میں وزیراعظم،عسکری قیادت سمیت دیگر رہنما موجود تھے۔اس اجلاس میں طے ہوا تھا کہ کراچی کا ایڈمنسٹریٹرغیرسیاسی ہوگا اور کسی بھی سیاسی فرد کی اس عہدے پر تقرری معاہدے کی خلاف ورزی ہوگی۔ انھوں نے کہا کہ مرتضی وہاب ایک سیاسی جماعت کے رکن ہیں اور ایسا کوئی فیصلہ جس میں وعدہ خلافی ہے، وہ قابل قبول نہیں ہے۔گورنر سندھ نے مزید کہا کہ یہ کسی کی خالہ کا گھر نہیں ہے کہ فیصلے مسلط کردئے جائیں۔

کراچی سے متعلق ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ شہر کے نالوں کی صفائی 100 فیصد وفاق کی جانب سے دی گئی رقم سے ہورہی ہے۔ گورنر سندھ نےکراچی ٹرانسفارمیشن پیکج میں تاخیر ہونے کا اعتراف کیا اور کہا کہ کراچی پیکج کو جس تیزی سے مکمل ہونا چاہیے تھا وہ نہیں ہوسکا۔ اگر سندھ حکومت ایڈمنسٹریٹر جیسے معاملات کو لے کر روڑے نہ اٹکائے توپیکج تیزی سے مکمل ہوگا۔

عمران اسماعیل نے یہ بھی کہا کہ پورے پاکستان میں صحت کارڈ مل رہے ہیں لیکن سندھ واحد صوبہ ہے جہاں صوبائی حکومت سےتعاون نہ ملنے کی وجہ سے صحت کارڈ نہیں مل رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں