ہائیکورٹ حملہ:بارسیکریٹری سمیت4وکلاکاجوڈیشل ریمانڈمنظور

فائل فوٹو

اسلام آباد ہائی کورٹ پر حملے میں ملوث 4 گرفتار وکلا کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا ہے۔ گرفتار وکلا میں سیکریٹری بار اسلام آباد لیاقت کمبوہ بھی شامل ہیں۔

گرفتار وکلا کو جمعہ 12 فروری کو انسداد دہشت گردی عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت نےچاروں ملزمان کو 19 فروری تک جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دے دیا۔

دوسری جانب غیر قانونی چیمبرز گرائے جانے کے خلاف احتجاج کے نام پر اسلام آباد ہائیکورٹ پر حملہ اور توڑ پھوڑ کرنے والے 32 وکلاء کے کیسز کی سماعت کیلئے 5 بینچ تشکیل دے دیا گیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار آفس سے جاری کاز لسٹ کے مطابق وکلاء کیخلاف توہین عدالت کیسز کی سماعت 5 مختلف بینچ کریں گے۔ احسن مجید گجر سمیت دیگر کیخلاف توہین عدالت نوٹس کی سماعت جسٹس عامر فاروق، کلثوم رفیق سمیت دیگر کے خلاف توہین عدالت نوٹس کی سماعت جسٹس فیاض احمد انجم جندران، مظہر جاوید کے خلاف توہین عدالت نوٹس کی سماعت جسٹس غلام اعظم قمبرانی، خالد محمود کے خلاف توہین عدالت نوٹس کی سماعت جسٹس طارق جہانگیری، راجہ امجد سمیت دیگر کے خلاف توہین عدالت نوٹس کی سماعت جسٹس بابر ستار کریں گے۔

واضع رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ پر حملہ اور توڑ پھوڑ کرنے والے 32 وکلاء کو شوکاز نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔ وکلا نے پیر 8 فروری کو اسلام آباد ہائی کورٹ پر حملہ، توڑ پھوڑ اور چیف جسٹس ہائیکورٹ کو یرغمال بنایا تھا۔

متعلقہ خبریں