30 سال سے زائد عمر کے افراد کی ’واک ان‘ ویکسینیشن کا اعلان

وفاقی وزیر اور نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے سربراہ اسد عمر نے کہا ہے کہ ’این سی او سی کے آج جمعے کو ہونے والے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ کل سے 30 سال سے زائد عمر کے افراد کی ویکسینیشن کی جائے گی۔‘
جمعے کو اپنی ٹویٹ میں اسد عمر نے لکھا کہ ‘اگر آپ کی عمر 30 یا اس سے زائد ہے اور آپ رجسٹرڈ ہیں تو کسی بھی ویکسینیشن سینٹر تشریف لے جائیں اور ویکسین لگوائیں۔‘
دوسری جانب وزیر تعلیم پنجاب مراد راس نے کہا ہے کہ ’لاہور میں سات جون کو سکول کھول دیے جائیں گے جبکہ جون سے پہلے پہلے تمام اساتذہ اور دیگر عملے کی ویکسینیشن مکمل کر دی جائے گی جس کا آغاز کر دیا گیا ہے۔‘
جمعے کو لاہور میں وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کے ہمراہ صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے بتایا کہ ’کوشش ہے کہ گرمی کی چھٹیاں کم سے کم ہوں۔‘
ان کے بقول ’بہت ہو گئیں چھٹیاں، بچوں کا بہت وقت ضائع ہوا ہے۔‘ جب ان سے پوچھا گیا کہ چھٹیاں کتنی ہوں گی تو ان کا کہنا تھا کہ دو سے تین ہفتے یا پھر اس سے بھی کم ہو سکتی ہیں۔
مزید پڑھیں
اس سوال کے جواب میں کہ کیسے پتہ چلے گا کسی ٹیچر نے ویکیسن لگوائی ہے یا نہیں؟ ان کا کہنا تھا کہ ’شناختی کارڈ کے ذریعے ویکسینیشن ہو گی، ہمارے پاس پورا ڈیٹا موجود ہو گا۔‘
انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ’لاہور میں 16 ہزار ٹیچرز اور چار ہزار نان ٹیچر سٹاف ہے۔‘ اس موقع پر وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ پنجاب میں 35 لاکھ افراد کو ویکسین لگائی جا چکی ہے۔ بقول ان کے ’ یومیہ ڈیڑھ لاکھ ویکسینز لگانے کا ہدف ہے۔‘

مراد راس کا کہنا تھا کہ سکول کھلنے سے قبل تمام اساتذہ اور دیگر عملے کی ویکسینیشن کروائی جائے گی (فوٹو: اے ایف پی)
جو لوگ ویکسین نہیں لگوانا چاہتے ان کے ساتھ کیا معاملہ ہوگا؟ اس سوال پر مراد راس نے کہا کہ انہیں قائل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔
اس کے باوجود بھی ویکسین نہ لگوانے کے حوالے سے استفسار پر ان کا کہنا تھا کہ ’زبردستی تو نہیں کی جا سکتی، بات چیت کے ذریعے ہی قائل کیا جائے گا۔‘
علاوہ ازیں جمعے کو این سی او سی کی جانب سے کی جانے والی ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ ’امتحانات کے محفوظ انعقاد اور تعلیمی اداروں میں محفوظ ماحول یقینی بنانے کے لیے 18 سال سے زائد اساتذہ کے لیے ویکسینیشن کا آغاز کر دیا گیا ہے، وہ شناختی کارڈ اور ادارے کے سربراہ کا مصدقہ لیٹر ساتھ لے کر کسی بھی ویکسینیشن سینٹر جا کر ویکسین لگوا سکتے ہیں۔‘